براڈ شیٹ کمیشن کے سربراہ کی تنخواہ و مراعات سے متعلق سمری کابینہ کو ارسال

براڈ شیٹ کمیشن کے سربراہ کی تنخواہ و مراعات سے متعلق سمری کابینہ کو ارسال

براڈ شیٹ کیس،وفاقی حکومت کا کمیشن کے سربراہ کو سپریم کورٹ کے جج کے برابر تنخواہ ودیگر مراعات دینے کا فیصلہ۔

نجی خبر رساں ادارے کے مطابق وفاقی حکومت نے براڈ شیٹ کیس کے معاملے کی تحقیقات کرنے والے کمیشن کے سربراہ جسٹس (ر) عظمت سعید کو سپریم کورٹ کے جج کے برابر تنخواہ اور دیگر مراعات دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ جس کے لیے کابینہ ڈویژن نے وفاقی کابینہ کو سمری بھیج دی ہے۔

کابینہ ڈویژن کی جانب سے وفاقی کابینہ کوئی بھیجی گئی سمری میں وفاقی کابینہ سے جسٹس ریٹائرڈ شیخ عظمت سعید کو سپریم کورٹ کے جج کے برابر تنخواہ اور مراعات دینے کی اجازت طلب کی گئی ہے۔

ارسال کردہ سمری میں کہا گیا ہے کہ پہلے بنائے گئے کمیشنز کی سربراہی حاضر سروس افسران کرتے رہے ہیں اس لیے تنخواہوں اور الاؤنسز کا مسئلہ پیش نہیں آیا، قواعد کے مطابق ریٹائرڈ جج یا افسر کی تعیناتی پر ان کی سابق تنخواہ دی جاتی ہے، کمیشن کی جانب سے کوئی اور رکن تعینات کیا گیا تو اس پر بھی یہی رولز لاگو ہوں گے۔

خبر رساں ادارے کا یہ بھی دعویٰ ہے کہ اس سمری کو منظوری کے لیے کل وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پیش کیا جائے گا جس کی باضابطہ منظوری دیئے جانے کا امکان ہے۔

اپوزیشن اور عوامی حلقوں کی جانب سے شدید تنقید کے بعد معاملے کی تحقیقات کے لیے سپریم کورٹ کے سابق جج جسٹس (ر) عظمت سعید شیخ پر مشتمل ایک رکنی انکوائری کمیشن قائم کیا گیا۔ کمیشن کا دائرہ اختیار ناصرف براڈ شیٹ تنازع کے معاملات کی تحقیقات کرنا ہے بلکہ اس بات پر بھی غور کرنا ہے کہ غیر ملکی سرمایہ کاری میں چھپائے گئے اثاثے برآمد کرنے کی بے دل اور غلط سمت کوششوں کی وجہ سے ریاست کو اتنا بڑا نقصان کیوں ہوا اور اس کا ذمہ دار کون ہے۔

  • واہ رے پاکستانی مظلو مقوم تیری قسمت میں دھکے کھانے ہی لکھے ہیں
    جو بندہ ایک مشکوک سی غیر ملکی فرم کو کنٹریکٹ دلوانے کا ذمہ دار اور اربوں کا نقصان کروا چکا اب وہ اپنی ہی انکوائری کرے گا اور پاکستانی قوم کو کروڑوں روپیہ پھر اپنے اوپر خرچ کرواے گا
    اس کو کہو تو رہنے دے انکوائری جو ہوا سو ہوا اب مزید چونا نہیں لگوانے کا


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >