سپریم کورٹ نے رجسٹرار اسلام ہائی کورٹ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا

اسلام آباد: وکلا چیمبرز گرانے سے متعلق کیس میں سپریم کورٹ نے رجسٹرار اسلام ہائی کورٹ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا۔

چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے دو رکنی بنچ نے وکلا کے چیمبرز گرانے سے متعلق نظر ثانی کیس کی سماعت کی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں آج ہونے والی سماعت میں رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ نے اپنی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرائی، سپریم کورٹ نے رجسٹرار اسلام آبادہائی کورٹ کی رپورٹ پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے انہیں توہین عدالت کو نوٹس جاری کردیا۔

توہین عدالت کا نوٹس وکلا چیمبرز گرانے سے متعلق نظرثانی کیس میں جاری کیا گیا، سپریم کورٹ نے رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کو 7 دن میں جواب جمع کرانے کا حکم دیا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ رجسٹرار ہائی کورٹ نے عدالتی احکامات کو سنجیدہ نہیں لیا، سپریم کورٹ کے احکامات پر عملدرآمد جونیئر افسران پر چھوڑ دیا، رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ عدالتی فیصلے پر عملدرآمد میں ناکام رہے۔

اپنے ریمارکس میں چیف جسٹس نے کہا کہ کیوں نہ رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کو معطل کر دیں؟ رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کا دماغ خراب ہے ۔

اس موقع پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے سپریم کورٹ کو بتایا کہ غیر قانونی جگہ پر قائم عدالتیں مسمار کر دی ہیں جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ عدالتوں کا ڈھانچہ ہماری کوششوں سے گرایا گیا، اسلام آباد ہائی کورٹ کے رجسٹرار نے تو کچھ بھی نہیں کیا۔

چیف جسٹس گلزار احمد نے سخت ریمارکس دئیے کہ توہین عدالت میں سزا ہوئی تو رجسٹرار کونوکری سے فارغ کردیا جائے گا۔

عدالت نے کیس کی سماعت سات روز کے لیے ملتوی کردی۔

  • It is empty rhetoric, if they wanted to hold him responsible for contempt, they could have suspended him, let the response come from someone else in Islamabad H C.
    Pakistani judiciary just play with words, no actions against crooks, crooked judges and staffs.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >