بلاول جواب دے کہ اسٹیبلیشمنٹ سے اتحاد کیوں کیا؟ شاہد خاقان عباسی

پیپلزپارٹی اور پی ڈی ایم کی راہیں جدا، شاہد خاقان عباسی کے پی پی سے سوالات

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے سیکرٹری جنرل اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے پیپلزپارٹی کی قیادت سے سوال کیا ہے کہ وہ بتائیں آخر انہوں نے حکومت اور اسٹیبلشمنٹ سے اتحاد کیوں کیا ہے؟

لیگی رہنما نے کہا کہ اگر پیپلزپارٹی اپوزیشن کے اس اتحاد کے ساتھ نہیں رہنا چاہتی تو یہ ان کا اپنا فیصلہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر کوئی جماعت اتحادیوں کا اعتماد کھو دے تو پھر اس کی اتحاد میں واپسی کا کوئی امکان نہیں ہوتا۔

شاہد خاقان عباسی نے واضح کیا کہ اتحاد کو چھوڑنے والوں کا اپنا راستہ ہے اور پی ڈی ایم کا اپنا راستہ ہے، ہمارا مقصد اس نظام کی تبدیلی ہے۔

انہوں نے نیب کے معاملے پر کہا کہ نام نہاد احتساب کا تماشا ایسے ہی لگا رہے گا، احتساب کے معاملات سب کے سامنے ہیں۔ ملک میں کرپشن نیب سمیت کسی کو نظر نہیں آتی؟ وہ وقت دور نہیں جب احتساب کرنے والوں کا احتساب ہوگا۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ تحریک لبیک کے احتجاج کے معاملے پر حکومت سے پوچھا جائے۔ کیونکہ یہ یائبرڈ حکومت ناکام ہو چکی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کیا آج ملک کا سب سے بڑا مسئلہ مردم شماری ہے؟ مہنگائی بڑھ گئی، بجلی وگیس کی قیمتوں میں اضافہ ہو گیا اس کا جواب کون دے گا؟

  • جنرل ضیا کا ایک حرامی پالتو کتا تھا خاقان عباسی اس کو جنرل ضیا نے اپنے کتوں کی طرح پال کر وزیر بنایا تھا مگر وہ حرامی نسل کا بو بکرا تھا اس واسطے اس نے اس دور میں اربوں روپے کا فراڈ کیا اور اور جب انکوائری ہوئی تو وہ نطفہ حرام کتے کی موت مارا گیا اس نے اپنے حرام۔ موت مرنے کے بعد اپنا کتورہ شاہد خاقان عباسی جنرل ضیا کے پالتے کتے کے طور پر چھوڑا باپ خاقان عباسی تو حرامی تھا ہی جس نے اربوں روپے لوٹے مگر بیٹا شاہد خاقان بو بکرا مہا حرامی نکلا جس۔ نے اربوں ڈالر اس غریب عوام کا کھا لیا اب اس سے پہلے کہ یہ حرامی بو بکرا شاہد خاقان عباسی چور فراڈیا بھی اپنے باپ کی طرح کسی کتے کی موت مر جائے اور غریب عوام کا پیسہ ڈوب جائے اس سے وہ اربوں ڈالر اس چور فراڈئے بو بکرے کو الٹا ٹانگ کر نکلوانے کی ضرورت ہے

  • اور اگر بلاول۔ نے جواب دیدیا تو اس حرامی بو بکرے کے اندر بہت دور تک جائیے گا پھر یہ حرامی بو بکرا کتے کی طرح چیاؤں چیاؤں کرے گا


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >