پارٹی فنڈنگ کیس میں تحریک انصاف کے لیے الیکشن کمیشن سے بڑاریلیف

الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی غیر ملکی پارٹی فنڈنگ کا ریکارڈ درخواستگزار اکبر ایس بابر کو فراہم کرنے کی درخواست خارج کرتے ہوئے فیصلہ سنا دیا۔ دونوں فریقین کو 8 روز تک صبح 10 بجے سے دوپہر 3 بجے تک ریکارڈ کا جائزہ لینے کی اجازت ہو گی۔

اکبر ایس بابر صرف سکروٹنی کمیٹی اجلاس میں ہی پی ٹی آئی کا جمع کرایا گیا ریکارڈ دیکھ سکیں گے۔ الیکشن کمیشن نے سکروٹنی کمیٹی کو مئی کے آخر تک تحقیقات مکمل کرنے کا بھی حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق غیرملکی پارٹی فنڈنگ کیس میں تحریک انصاف کو الیکشن کمیشن سے بڑا ریلیف مل گیا، سکروٹنی کمیٹی میں جمع کرائے گئے پی ٹی آئی کے اکاؤنٹس کا ریکارڈ فراہم کرنے کی اکبر ایس بابر کی درخواست خارج کرتے ہوئے اکبر ایس بابر کو صرف کمیٹی میں ریکارڈ کا جائزہ لینے کا حکم دے دیا، الیکشن کمیشن فیصلے کے مطابق دونوں فریقین کو 8 روز تک ریکارڈ کا جائزہ لینے کی اجازت ہوگی۔

دونوں فریقین کے دو چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس اور مالیاتی ماہرین ریکارڈ کا جائزہ لے سکتے ہیں، اکبر ایس بابر ہفتے میں دو دن صبح 10 بجے سے دوپہر 3 بجے تک ریکارڈ دیکھ سکیں گے۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ فریقین دستاویزات کے جائزے کیلئے دو تکنیکی ماہرین کے نام فراہم کریں، سکروٹنی کمیٹی کے سربراہ ڈی جی لا ریکارڈ کا جائزہ لینے کے وقت موجود ہونگے اور ریکارڈ کا تحفظ یقینی بنائیں گے۔

یاد رہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان نے 6 اپریل کو فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

  • باقی پارٹیوں نون لید اور پی پی پی، جمعیت علمائے اسلام ف کی فنڈنگ کی کیا تفصیلات ہیں۔ ان پارٹیوں کا بھی فنڈنگ سورس عوام کے سامنے انا چاھے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >