وزیر اعظم نے تحریک لبیک پرپابندی لگانے کی سمری منظوری کر لی

وزارت داخلہ کی جانب سے ٹی ایل پی پر پابندی کی سمری تیار، پی ایم آفس سے بھی منظوری کیلئے گرین سگنل

تحریک لبیک پاکستان کی جانب سے حالیہ پرتشدد مظاہروں کے بعد مرکزی (وفاقی) حکومت کی جانب سے ٹی ایل پی پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، تاہم اب اطلاعات ہیں ہیں وزارت داخلہ نے اس حوالے سے مکمل تیاری کے ساتھ سمری بنا لی ہے اور وزیراعظم کی جانب سے بھی اس سمری کی منظوری کے سلسلے میں گرین سگنل مل گیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ٹی ایل پی کو کالعدم قرار دیئے جانے کیلئے بنائی گئی سمری کی آئندہ24 گھنٹوں میں منظوری لی جائے گی اور وفاقی کابینہ سرکلر سمری کے ذریعے اس جماعت کو کالعدم قرار دینے کی منظوری دے گی۔ یاد رہے کہ حکومت کی جانب سے یہ فیصلہ اینٹی ٹیرارازم ایکٹ 1997 (11)بی کے تحت کیا گیا ہے۔

اس حوالے سے گزشتہ روز وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا تھا کہ تحریک لبیک پاکستان پر پابندی کی سمری کابینہ کو بھجوا رہے ہیں، انہوں نے واضح کیا تھا کہ یہ پابندی انسداد دہشت گردی کے پاکستانی قوانین کے تحت عمل میں لائی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ ٹی ایل پی کے سیاسی حالات پر نہیں بلکہ کردار کی وجہ سے پابندی لگا رہے ہیں، یہ حکومت کو مسائل سے دو چار نہیں کرسکتے۔

وزیر داخلہ نے بتایا تھا کہ ٹی ایل پی نے پرتشدد مظاہروں کے دوران سرکاری املاک کو نقصان پہنچایا اور ان کے حملوں سے 2 پولیس اہلکار شہید جبکہ 340 زخمی بھی ہوئے۔ انہوں نے ٹی ایل پی کے سوشل میڈیا ہینڈلرز کو مخاطب کرتے ہوئے سرینڈر کرنے کا حکم دیا اور کہا کہ انہی کی ایما پر تھانوں پر حملے ہو رہے ہیں، پولیس اہلکاروں کو اغوا کیا جا رہا ہے اور راستے میں پھنسی ایمبولینسز کو بھی راستہ نہیں دیا جا رہا۔

وزیر داخلہ کے مطابق پنجاب حکومت نے ٹی ایل پی پر پابندی کا مطالبہ کیا تھا جس کے بعد وزارت داخلہ نے اس کی تیاری مکمل کر لی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >