‏میرے ساتھی ججزنے جوڈیشل کونسل میں مجھے پاگل شخص قراردیا، جسٹس فائز عیسٰی

کہنے کو ہم اسلامی جمہوریہ پاکستان دراصل منافقین کی قوم ہیں، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ

جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے دس رکنی لارجر بینچ نے جسٹس فائز عیسی نظرِ ثانی اپیل کی سماعت کی جس کے دوران ان کی اہلیہ سرینا عیسیٰ بھی عدالت میں پیش ہوئیں۔ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہا کہ کہنے کو ہم اسلامی جہموریہ پاکستان دراصل منافقین کی قوم ہیں

انہوں نے دلائل میں کہا کہ کیس ایف بی آر کو بھجوانے کا عدالتی حکم آئین اور متعدد قوانین کے خلاف ہے، خاتون چیئرپرسن ایف بی آر کو میرا کیس جاتے ہی عہدے سے ہٹا دیا گیا۔ آرٹیکل 184/3 بنیادی حقوق کے تحفظ کے لیے ہے،میری بیٹی اور بیٹے کو ایف بی آر نوٹس کا حکم بنیادی حقوق کے زمرے میں نہیں آتا۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے عدالت میں کہا کہ عمران خان کرکٹر تھے تو ان کا مداح تھا آٹوگراف بھی لیا، عمران خان بھی ایک انسان ہیں۔

درخواست گزار جج نے کہا کہ جسٹس عظمت سعید میرے دوست تھے لیکن ان کے فیصلے پر دکھے ہوا، جسٹس عظمت سعید آج حکومت کی پسندیدہ شخصیت ہیں، سابق چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے میرا موقف سنے بغیر میری پیٹھ میں چھرا گھونپا۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے انہیں ٹوکتے ہوئے کہا کہ عدالتی فیصلے میں جو غلطیاں ہیں ان کی نشاندہی کریں، سپریم جوڈیشل کونسل کے بارے میں آپ کے وکیل نے دلائل نہیں دیے تھے۔ جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کا کہنا تھا کہ سپریم جوڈیشل کونسل نے انصاف کا قتل عام کیا، صدر نے میرے 3 خطوط کا جواب تک دینا گوارا نہیں کیا، مجھے ریفرنس کی کاپی نہیں ملی لیکن میڈیا پر بینڈ باجا شروع ہوگیا۔

جسٹس منیب اختر نے کہا کہ جن ججز کے آپ نام لے رہے ہیں وہ ریٹائر ہوچکے ہیں، بار بار دو ججز پر الزامات نہ لگائیں۔ اس موقع پر جسٹس مقبول باقر نے بھی جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کو کہا کہ اپنے کیس پر دلائل دیں آپ کی مہربانی ہوگی۔

جس پر جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہا کہ کیا فائز عیسٰی اس عدالت کا جج نہیں ہے؟ کیا عظمت سعید اور آصف سعید کھوسہ کے نام بہت مقدس ہیں، آپ چاہتے ہیں موجودہ چیف جسٹس کا نام لوں؟

انہوں نے کیا کہ مجھے بطور جج سپریم کورٹ کے عہدے سے ہٹانا چاہتے ہیں، مجھے عہدے سے ہٹانے کی خواہش کی وجہ یہ ہے کہ میں نے فیض آباد دھرنا کیس کا فیصلہ دیا، میرے عہدے پر رہنے یا نہ رہنے سے فرق مجھے نہیں ملک کو پڑے گا، میں خون کے آخری قطرے تک لڑوں گا، ہمت نہیں ہاروں گا۔ فیض آباد دھرنا کیس کے فیصلے کے بعد مجھ پر قیامت برپا کی گئی، خادم رضوی کے علاوہ باقی سب نے فیض آباد دھرنا فیصلہ چیلنج کیا۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف اور ایم کیو ایم نے بھی فیض آباد دھرنا فیصلے کے خلاف نظرثانی اپیل دائر کی، تحریک انصاف کی نظرثانی درخواست میں کہا گیا میں جج بننے کا اہل ہی نہیں ہوں، میں واقعی جج بننے کا اہل نہیں کیوں کہ میں بنیادی حقوق کی بات کرتا ہوں۔ دوران سماعت جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اور جسٹس منیب اختر کے درمیان سخت جملوں کا تبادلہ بھی ہوا۔

جسٹس منظور احمد ملک نے کہا کہ جج صاحب آپ پارٹی نہ بنیں بلکہ ایک وکیل کی طرح اپنے دلائل دیں جس پر قاضی فائزعیسیٰ بولے کہ میں وکیل کے طور پر دلائل نہیں دے سکتا، میں ذاتی حیثیت میں دلائل دے رہا ہوں۔ جسٹس منظور احمد ملک، فائز عیسیٰ اور جسٹس منیب اختر کے درمیان بچاؤ کراتے رہے بعدازاں جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے جسٹس منیب اختر سے معذرت کرلی۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہا کہ سال 2019 میں گرمیوں کی چھٹیاں لی، گرمیوں کی چھٹیوں کے دوران سپریم جوڈیشل کونسل نے کارروائی کی، میرے سسر کا آپریشن تھا اسی دوران ہی مجھے تکلیف دی گئی۔ شہزاد اکبر پی ٹی آئی کور کمیٹی کے ممبر ہیں، انہوں نے اپنے خلاف کسی الزام کی تردید نہیں کی، شہزاد اکبر کو جیل میں ہونا چاہیے لیکن وہ اہم عہدے پر ہیں، شہزاد اکبر پی ٹی آئی کے ورکر اور غیر منتخب شخص ہیں۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ حکومت میں موجود غیر منتخب افراد کو غلط نہ کہیں، سیاسی لوگوں کو حکومتی عہدے ملتے رہتے ہیں، ان باتوں کو چھوڑیں اور اصل مدے پر آئیں۔ جسٹس مقبول باقر نے کہا کہ اثاثہ ریکوری یونٹ پر فیصلے میں لکھ چکے ہیں۔ جس پر انہوں نے کہا کہ انور منصور توہین عدالت کے مرتکب ہوئے تھے، انور منصور نے کہا بینچ میں موجود ججز میری مدد کر رہے ہیں، آج تک انور منصور نے معافی نہیں مانگی۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ آپ شاید حقائق سے واقف نہیں، انور منصور کو عہدے سے مستعفی ہونا پڑ گیا تھا، ججز کے بارے میں جس نے بھی بات کی اس کے کے خلاف ایکشن لیا گیا۔ بعد ازاں عدالت نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نظر ثانی کیس کی سماعت پیر تک کے لیے ملتوی کردی۔

  • یہ۔ چور فراڈیا ڈرامے باز منی لانڈر فائیز عیسی کو یہ نہیں معلوم صرف ساتھی ججز ہی نہیں عوام کی اکثریت بھی اس حقیقت سے واقف ہے کہ تم پاگل ہو فراڈئے اپنی ٹریل دو اتنا بھونک بھونک کر بکنے سے منی ٹریل دینی زیادہ آ سان ہے

  • Okay he has gone mad!! He hates everything every one!! He thinks There is conspiracy brewing against him by judges who came before him or those who surround him!! He is also against PTI workers !! Anyone who opposes him should be in jail!! Wow!!

  • ہماری میڈیکل ٹرم میں قاضی فائیز عیسی کی دماغی بیماری کو پیرا نائیڈ پرسنلٹی ڈس آ رڈر بولا جاتا ہے
    PPD
    PARANOID PERSONALITY DISORDER
    ایک پروفیشنل کی حیثیت سے میں یہ چیلنج کرتا ہوں کہ اس قاضی عیسی کو کسی سائکیٹر سٹ کو دکھائیں وہ لازمی اسکی تشخیص پی پی ڈی کی کرے گا اگر دماغی طور پر بیمار قاضی پی پی ڈی کا مریض نہ نکلے تو میں پریکٹس چھوڑ دوں گ

  • What Is Paranoia?

    Paranoia is the feeling that you’re being threatened in some way, such as people watching you or acting against you, even though there’s no proof that it’s true. It happens to a lot of people at some point. Even when you know that your concerns aren’t based in reality, they can be troubling if they happen too often.

    Clinical paranoia is more severe. It’s a rare mental health condition in which you believe that others are unfair, lying, or actively trying to harm you when there’s no proof. You don’t think you’re paranoid at all because you feel sure it’s true. As the old saying goes, “It isn’t paranoia if they’re really out to get you.”

  • اور اگر تمہارے ساتھی ججز نے تمہیں پاگل سمجھ لیا تو انکو سلیوٹ کہ جو کامُ دراصل ڈاکٹرز کا تھا وہ ججز نے کر لیا اور وہ تمہاری دماغی بیماری سمجھ گئے
    اب کسی اچھے سائکیٹرسٹ کو دکھا کر اپنا پیرا نائیڈ پرسنلٹی کا علاج کراؤ کیونکہ تمہارا کلینیکل پیرا نویا ہے اگر علاج نہ کرایا کچھ عرصے بعد اپنے بال نوچنے شروع کر دوگے اور پھر آ خری سٹیج میں پتھر مارو گے لوگوں کو اس سٹیج پر جانے سے پہلے علاج شروع کراؤ
    پاکستان میں ڈاکٹر مبشر جیسے قابل لوگ بھی موجو د ہیں

  • Pagal tu hey sala but there are a number of anti Pakistani forces who want him to remain judge of supreme court in order to repeat chaudry ifthikar 2007 drama. I know that he is neither able nor honest or neither was chosen on merit by Ifthikar Chaudry. However, he is hero of all corrupt and anti state elements and if the supreme judicial council does not remove him, Pakistan and its people will suffer immensely. Remember he is the one who rescued Sharif family in Hudabiya case which was open and shut case.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >