بھارت ممکنہ طور پر پاکستان کے خلاف طاقت کا استعمال کرسکتا ہے، امریکی رپورٹ

امریکی کانگریس کو دی گئی انٹیلی جنس رپورٹ میں پاک بھارت ممکنہ کشیدگی سے خبردار کر دیا گیا

یو ایس ڈائریکٹر آف نیشنل انٹیلی جنس نے خطرے کے جائزے کی سالانہ رپورٹ 2021کانگریس کو ارسال کی ہے۔ جس میں خبردار کیا گیا ہے کہ بھارتی وزیراعظم کی قیادت میں بھارت کی جانب سے ماضی کی بنسبت پاکستان کی سمجھے جانے والی یا حقیقی اشتعال انگیزی پر فوجی طاقت سے جواب دینے کا زیادہ امکان ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ خطے میں سخت کشیدگی نے 2 جوہری ہتھیاروں سے لیس ہمسایہ ممالک کے مابین تنازع کا خطرہ بڑھا دیا ہے جس میں کشمیر میں پر تشدد بے امنی یا بھارت میں عسکری حملہ ممکنہ خطرات ہیں۔

رپورٹ امریکی خفیہ ادارے کا کہنا ہے کہ 2021 کے دوران بھارت اور پاکستان کے بیچ ایک عمومی جنگ کا امکان نہیں لیکن دونوں کے درمیان بحران مزید شدید ہوسکتا ہے جس سے کشیدگی کا خطرہ ہے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل کانگریس کو بھجوائی گئی ایک اور امریکی انٹیلجنس رپورٹ میں خبردار کیا گیا تھا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان آئندہ 5 سالوں میں حقیقی یا سمجھی گئی اشتعال انگیزی پر جنگ ہوسکتی ہے۔

جنوبی ایشیا سے ممکنہ خطرات کا جائزہ لیتے ہوئے رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چین کی ‘عالمی طاقت کے لیے کوشش’ کو امریکی مفادات کے لیے سب سے پہلا خطرہ قرار دیا گیا جس کے بعد روس کے اشتعال انگیز اقدامات اور ایران سے متعلق خطرات ہیں۔

رپورٹ میں اندازہ لگایا گیاکہ افغان حکومت اور طالبان کے درمیان 2021 میں امن معاہدے کے امکانات کم ہیں۔ اور یہ کہ کابل کو لڑائی کے میدان میں دھچکوں کا سامنا رہے گا کیونکہ طالبان پر اعتماد ہیں کہ وہ عسکری فتح حاصل کریں گے۔

  • یہ بیان تنبیہ، دھمکی اور منصوبہ ہے
    تنبیہ سے کام نا چلا تو دھمکی آئے گی اور اس کے بعد منصوبہ
    امریکا چاہتا ہے پاکستان بھارت کے تابع ہو جائے. بدعنوان عناصر کی وجہ سے معاشی صحت وینٹیلیٹر پر چل رہی ہے ایک عسکری مدافعت باقی ہے جس نے امریکا کو اس کے منصوبے پر عمل کرنے سے روک رکھا ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >