اسلام آباد، مجبور خواتین کا فائدہ اٹھانے والے ماہر نفسیات ڈاکٹر کا پردہ فاش

نجی ٹی وی چینل پر سرعام کے نام سے پروگرام کرنے والے معروف صحافی اور اینکرپرسن اقرار الحسن نے اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے ایک ایسے ماہر نفسیات ڈاکٹر کا پردہ فاش کر دیا جو کہ اپنے پاس نفسیاتی مسائل لیکر مجبوری کی حالت میں پہنچتی تھیں۔

تفصیلات کے مطابق پروگرام کے دوران اقرار الحسن نے بتایا کہ اسلام آباد میں نفسیاتی امراض کا مشہور ڈاکٹر دراصل جنسی درندہ ہے، جس نے اپنے پاس پریشانی کے عالم میں آنے والی خواتین مریضوں اور اپنی طالبات کو بھی نہ بخشا وہ ان کی مجبوری کا فائدہ اٹھاتا ان سے نہ صرف غیر اخلاقی گفتگو کرتا بلکہ ان کا جنسی استحصال بھی کرتا۔

اقرار الحسن نے بتایا کہ انہیں اس ڈاکٹر کے رویے اور جنسی استحصال و زیادتی کے حوالے سے شکایات موصول ہو رہی تھیں جس کے بعد ایک اسٹنگ آپریشن کے لیے ایک خاتون کو مہرہ بنا کر اس ڈاکٹر کے پاس بھیجا گیا جس نے اس ڈاکٹر کے ساتھ ہونے والی تمام تر نازیبا گفتگو کو ریکارڈ کیا جس سے اس ڈاکٹر کے ناپاک عزائم واضح ہو گئے ۔

ڈاکٹر اور اس مریضہ کے مابین ہونے والی گفتگو میں سنا اور دیکھا جا سکتا ہے کہ وہ اس خاتون کو اپنے تمام تر حقوق انہیں سونپنے کی بات کرتے ہیں اور اس خاتون کو پریشانی کا علاج بتانے کی بجائے اسے کہتے ہیں کہ انہیں اچھی کمپنی کی ضرورت ہے جو ان کی شکل میں خاتون کو باآسانی مل سکتی ہے۔

اقرارالحسن نے مزید بتایا کہ جب انہوں نے اس ڈاکٹر کے اس رویے سے متعلق حقائق کی بنیاد پر بات کی تو اس نے انکار کیا مگر جب اسے تمام ریکارڈنگز اور ثبوت دکھائے گئے تو اس سے کوئی جواب نہ بن پڑا۔ انہوں نے بتایا کہ یہ ڈاکٹر خواتین کو اسلام آباد سے چکوال اپنے پاس بلاتا اور انہیں کئی راتوں تک اپنے پاس رکھتا تھا۔

  • ہوس سے کہ جاتی نہیں. معلم ہو ڈاکٹر ہو یا مولوی. اب کے سب سیکس کی حوص میں مبتلا ہیں اور خود سے کمزور کی کمزوری. سے فائدہ اٹھانا بحیثیت معاشرہ ہم اپنا حق سمجھتے ہیں.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >