پنجاب حکومت نے غیرقانونی ہاؤسنگ سوسائٹیز کو ریگولرائز کر دیا

پنجاب حکومت کی جانب سے صوبے میں 6 ہزار غیرقانونی ہاؤسنگ سوسائٹیز کو ریگولرائز کرنے کا انکشاف ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت کی جانب سے آرڈیننس کے تحت صوبے میں 6 ہزار غیرقانونی ہاؤسنگ سوسائٹیز کو 2 فیصد کے معمولی جرمانے کے عوض ریگولرائز کر دیا گیا جبکہ یہ تمام کارروائی خاموشی کے ساتھ مکمل کی گئی۔

ایک آئینی عہدے دار نے قانون کا مسودہ تیار کیا جبکہ قانون کی منظوری کابینہ سے سرکولیشن کے ذریعے لی گئی جبکہ سرکاری حکام کو اس معاملے پر غور و خوص ہی نہیں کرنے دیا گیا۔

کئی وزراء نے رائے دینے سے گریز کیا لیکن ان کی خاموشی کو رضامندی سمجھ کر اس آرڈیننس کو منظور کر لیا گیا۔

اس قانون کو آرڈیننس کے ذریعے نافذ کیا گیا ۔

اس آرڈیننس کے نفاذ کے بعد ایک نجی ٹی وی چینل نے اسے این آراو قرار دیا ہے جبکہ کچھ ن لیگی رہنماؤں نے اسے تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ایک طرف تو حکومت نوازشریف کا جاتی امراء پیلس گرانے کی تیاری کررہی ہے تو دوسری طرف ہاؤسنگ سوسائٹیز کو بھی این آر او دے رہی ہے۔

دوسری جانب ہاؤسنگ سوسائٹیز کو ریگولرائز ہونے پر متاثرہ افراد نے خوشی کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ وہ غیر یقینی صورتحال کا شکار تھے اور انہیں اپنی رقم ڈوبتی نظر آرہی تھی لیکن اس اقدام کے بعد وہ اپنا گھر حاصل کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>