اقتصادی رابطہ کمیٹی نے آئی پی پیز کو ادائیگیوں کیلئے رقم کے اجراء کی منظوری دے دی

اقتصادی رابطہ کمیٹی نے آئی پی پیز کو ادائیگیوں کیلئے رقم کے اجراء کی منظوری دے دی

وفاقی کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے انڈی پینڈنٹ پاور پروڈیوسرز (آئی پی پیز) کو ادائیگیوں کی پہلی قسط کے اجراء کی منظوری دیدی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں وزیر خزانہ شوکت ترین کی صدارت میں اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) کا اجلاس ہوا۔

اجلاس میں نجی بجلی گھروں کی پہلی قسط کی ادائیگی سمیت اہم گرانٹس کی منظوری دی گئی جبکہ ادائیگیوں کے اجراء کے ضمن میں وزیر خزانہ کی قیادت میں ذیلی کمیٹی قائم کر دی ہے۔ اجلاس میں ای سی سی کی جانب سے فیصلہ کیا گیا ہے کہ 47 آئی پی پیز کو کیپسٹی چارجز کی مد میں 90 ارب روپے دیئے جائیں گے تاہم 2002 کے پالیسی والے اور نیب کیسز میں ملوث آئی پی پیز کو ادائیگی نہیں کی جائےگی۔

اس موقع پر نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) کو 1 ارب 80 کروڑ روپے جاری کرنے کی بھی منظوری دی گئی۔ این ڈی ایم اے اس رقم سے آکسیجن اور اس کی تیاری سے متعلقہ سامان درآمد کرے گا ۔

ای سی سی اجلاس میں اسلام آباد ہائی کورٹ کی بلڈنگ کی تعمیر کے لیے 57 کروڑ روپے کی منظوری دی گئی جبکہ وزارت دفاع، پٹرولیم ڈویژن اور دیگر کے لیے تکنیکی ضمنی گرانٹ کی منظوری دی گئی ہے۔

اجلاس میں فیڈرل ایجوکیشن اینڈ پروفیشنل ٹریننگ کے لیے 1 ارب 56 کروڑ روپے کی منظوری دی گئی۔

  • جو مرضی کر لو اتھے رگڑا صرف غریب کیلئے ہے بس مل کر بانٹ رہیں ہیں مال حرام خور زندہ باد خانصاحب تن کے ر کھو


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >