بحریہ ٹاؤن کی گاؤں پر قبضے کی کوشش،گارڈز کی فائرنگ سے مزاحمتی شخص زخمی

بحریہ ٹاؤن کراچی کے گارڈز کے علاقہ خالی کرواتے ہوئے کی گئی مبینہ فائرنگ کے نتیجے میں گڈاپ ٹاؤن کا رہائشی زخمی ہوگیا ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بحریہ ٹاؤن کراچی کی جانب سے ٹاؤن کے اردگرد موجود جگہ کو دیہاتیوں سے خالی کرواکر اپنے قبضے میں لینے کیلئے آج پھر پرائیویٹ گارڈز اور پولیس کی مدد سے آپریشن کیا گیا جس میں فائرنگ کےدوران ایک شہری زخمی ہوگیا ہے۔

پولیس اس حوالے سے کسی بھی قسم کی تفصیلات شیئر کرنے سے گریز کررہی ہے تاہم سندھ کے ایک سماجی رہنما عبدالحفیظ کا کہنا تھا کہ بحریہ ٹاؤن کے گارڈز نے کمال خان جوکھیو گوٹھ میں جمعہ کی صبح فصلوں کو تباہ کرنے کی کوشش کی مگر مقامی لوگوں نے ان کے سامنے مزاحمت کی اور اس کوشش سے باز رہنے پر مجبور کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ بحریہ ٹاؤن کے گارڈز پولیس اہلکاروں جن میں وردی اور سادہ کپڑوں میں ملبوس اہلکار شامل تھے صبح تو مزاحمت کی وجہ لوٹ گئے مگر جمعہ کی نماز کے بعد واپس آئے اور فصلوں پر بلڈوزر چلانا شروع کردیئے۔

عبدالحفیظ کے مطابق 100 کے قریب مقامی لوگوں نے اس کارروائی پر شدید مزاحمت شروع کردی اسی دوران کسی جانب سے ایک پتھر بحریہ ٹاؤن انتظامیہ کے ایک افسر کی طرف پھینکا گیا جس پر گارڈز نے سیدھے فائر کھول دیئے جس کے نتیجے میں ایک دیہاتی شوکت خش خیلی کوگولی لگی جبکہ متعدد کو معمولی چوٹیں آئیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بحریہ ٹاؤن کے گارڈز زخمی دیہاتی اور اس کے ساتھ 3، 4 اور لوگوں کو اپنے ساتھ لے گئے ہیں۔
خبررساں ادارے نے اس حوالے سے بحریہ ٹاؤن انتظامیہ اور حکومت سندھ کا موقف جاننے کی کوشش کی تاہم کوئی جواب نہیں ملا۔

گوٹھ کے رہائشی بحریہ ٹاؤن انتظامیہ کے خلاف شدید احتجاج کرتے رہے ، دیہاتیوں کا مطالبہ ہے کہ ان کے زخمی ساتھی کو واپس ان کے حوالے کیا جائے اور واقعے کی ایف آئی آر بھی درج کروائی جائے۔

عبدالحفیظ نے بعد ازاں خبررساں ادارے کو بتایا کہ بحریہ ٹاؤن کے گارڈز زخمی شخص کو ہسپتال لے جانے کے بجائے مقامی پولیس اسٹیشن لے گئے اور اس کے خلاف ہی ایف آئی آر درج کروانے کی کوشش کرتے رہے تاہم زخمی شخص کے ساتھیوں نے پولیس اسٹیشن پہنچ کر اپنے ساتھی کو واپس لے کر اسے ہسپتال منتقل کردیا ہے۔

واضح رہے کہ چند روز پہلے بھی بحریہ ٹاؤن کراچی اور پولیس نے مل کر ایک گاؤں میں زمین خالی کروانے کیلئے ایسے ہی بھاری مشینری کا استعمال کیا اور علاقہ مکینوں کو بے گھر کرنے کی کوشش کی تھی، اس حوالے سے سندھ حکومت کسی قسم کا کوئی ردعمل یا ایکشن لینے سے انکاری نظر آتی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >