عدلیہ کی تاریخ میں خود احتسابی کی نئی تاریخ رقم

اسلام آباد ہائی کورٹ اور ضلعی عدالتوں کا پہلی دفعہ 2015 سے 2020 تک  کافرانزک آڈٹ مکمل کر لیا گیا۔ہائی کورٹ کی تاریخ میں پہلی دفعہ کسی چیف جسٹس نے اپنے ادارے کا فرانزک آڈٹ خود کروایا۔

فرانزک رپورٹ اور ڈیپارٹمنٹل اکاونٹس کمیٹی کی سفارشات ہائی کورٹ نے اپنی ویب سائٹ پر پبلک کردیں، جن میں کہا گیا ہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے اکاؤنٹس اور مالی معاملات میں مجموعی شفافیت پائی گئی تاہم سابق چیف جسٹس انور کاسی کی آئی ایٹ رہائش گاہ پر 18 لاکھ سے زائد خلاف ضابطہ فنڈز کے استعمال کی نشاندہی کی گئی۔

اسی طرح سابق چیف جسٹس انور کاسی کی جانب سے ججز ریسٹ ہاؤس کی ہائیرنگ میں خلاف ضابطہ 89 لاکھ سے زائد رقم استعمال کی نشاندہی بھی سامنے آئی ہے جس پر ڈیپارٹمنٹل کمیٹی نے مزید شواہد کے انتظار میں اس معاملے کو موخر کردیا ہے۔رپورٹ کے مطابق سیشن جج نے کیش شورٹیز کے معاملے میں 17 ملین سے زائد غبن کی نشاندہی کی۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ کے حکم پر ایف آئی اے نے انکوائری کی اور مرکزی ملزم کو گرفتار کرلیا۔ چیف جسٹس نے شفافیت اور مالی قوانین پر بہتر عملدرآمد کے لیے ضلعی عدالتوں میں آڈٹ آفیسر تعینات کردیا۔ رپورٹ کے مطابق ماتحت عدلیہ میں کیش شورٹی قومی خزانے میں جمع کرانے کی بجائے غیر مجاز طریقے سے جاری تھی جو اب بند کرا دی گئی۔

ہائی کورٹ کے احاطہ میں کینٹین دوکان کے ذمہ رینٹ اور بجلی بل کی مد میں 13 لاکھ سے زائد ادائیگی کی ہدایت کی گئی۔ جعلی ڈگری پر نکالے گئے دو ملازمین کے ذمہ ایک کروڑ ساٹھ لاکھ روپے ہیں ریکوری پراسیس جاری ہے، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے اسلام آباد ہائی کورٹ کے رجسٹرار ہائی کورٹ کو اعلی عدلیہ کے مالی اختیارات تفویض کردیے ہیں۔

  • یہ لیپا پوتی ہے قاضی فائز عیسی کیس پر پردہ ڈالنے کی ، شرم آنی چاہیئئے ، بتائیں سیرینہ عیسی کی جائیداد کہاں سے آئی، بات ختم

  • لاہور ہائی کورٹ کا بھی آڈٹ ہونا چاہئیے…پکڑو حرام خوروں کو
    نکالو حرام خوروں کو….شریفوں کے یاروں کو

  • یہ پاورز علاقے کی پنچائیت پر مشتمل معزز افراد کی کمیٹیاں ہوں + کونسلرز+ بڑے بڑے مفتی صاحبان پر مشتمل کمیٹیوں کو آڈٹ کرنا چاہیے۔ جو کہ ہر تین ماہ بعد تمام علاقوں کے تھانوں کا آڈٹ+ اسپتالوں کا آڈٹ+سیشن کورٹس+ہائی کورٹس کے آڈٹ کیا جائے اور ہر 3 ماہ بعد رپورٹ کو پبلک کیا جائے
    ہر 3 ماہ بعد تھانوں کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے ایسی طرح سے اسپتالوں اور کورٹس کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >