حکومت کا بڑا اقدام،والدین کو گھر سے نکالنے کو قابل سزا جرم قرار دے دیا

 حکومت کا بڑا اقدام،والدین کو گھر سے نکالنے کو قابل سزا جرم قرار دے دیا

صدر مملکت عارف علوی نے آئین کے آرٹیکل 89 کے تحت آرڈیننس جاری کر دیا جس میں والدین کو گھر سے نکالنا قابل سزا جرم قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق صدر عارف علوی کے آئین کے آرٹیکل 89 کے تحت تحفظ والدین آ رڈیننس جاری کرنے کا مقصد بچوں کی جانب سے والدین کو زبردستی گھروں سے نکالنے کے خلاف تحفظ فراہم کرنا ہے۔

اس نئے قانون کے تحت والدین کی طرف سے شکایت موصول ہونے پر پولیس کو اختیار ہوگا کہ وہ بغیر وارنٹ کے بچوں کو گرفتار کر سکیں گے۔

اس آرڈیننس کے تحت والدین اور بچوں دونوں کو اپیل کا حق ہوگا۔ بچوں کی طرف سے گھر نہ چھوڑنے کی صورت میں ڈپٹی کمشنر کو کاروائی کا اختیار ہوگا۔ دیئے گئے وقت پر گھر خالی نہ کرنے پر 30 دن جیل ،جرمانہ یا پھر دونوں سزائیں ہو سکتی ہیں۔

آرڈیننس میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ گھر جس میں رہ رہے ہیں وہ والدین کی ملکیت ہونے کی صورت میں انہیں اپنے بچوں کو گھر سے نکالنے کا اختیار ہو گا، جب کہ گھر اگر بچوں کی ملکیت ہے یا کرائے پر ہے تب بھی اولاد اپنے والدین کو گھر سے نہیں نکال سکے گی۔

آرڈیننس کی خلاف ورزی کرنے یا والدین کو گھر سے نکالنے پر اولاد کو ایک سال قید، جرمانہ یا دونوں سزائیں دی جائیں گی تاہم اگر والدین چاہیں تو بچوں کو گھر سے نکال سکتے ہیں اور والدین کی جانب سے تحریری نوٹس دیے جانے پر بچوں کو گھر خالی کرنا لازمی ہوگا۔

  • Aaj kal kay waldeen badmashon say bho baray badmaash hain… Jaan bhoojh ker bachoon ker khaas toor per betoon ko blackmail kertay hain… Akhir mein beta bpni biwi ko talaak dey deta hay aur phir theek thaak banda aakhir mein mujrim ban jaata hay….Jo waldeen khaas toor per maaein insaan kay bachay nahee aur blackmailer hain unh ko bho koyee saza denee chiyeee…

    • one shoudnt forget the upbringing by parents when kids used to urinate the bed for years and mothers & fathers stayed at the same place trying to keep bed dry for kids and slept on wet area of bed to comfort kids


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >