پشاور میں کم عمر بچوں کو منشیات دے کر بھیک منگوائے جانے کا انکشاف

کے پی کے صوبائی دارالحکومت پشاور میں کم عمر بچوں کو منشیات دے کر بھیک منگوائے جانے کا انکشاف

سوشل میڈیا پر پشاور کے ایک فٹ پاتھ پر سوئے کم عمر گدا گروں کی ویڈیو وائرل ہوئی، جس پر صوبائی وزیر سماجی بہبود ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان نے نوٹس لے لیا۔

صوبائی وزیر ڈاکٹر ہشام انعام اللہ کی ہدایت پر شروع ہونے والے آپریشن کے دوران 10 بچوں کو ریسکیو کر کے حفاظتی مرکز زمونگ کور منتقل کیا گیا، جہاں انہیں تمام سہولیات فراہم کی جارہی ہیں۔

وزیر سماجی بہبود ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان نے بتایا کہ مخصوص گروہ کے کارندے کم عمر بچوں کو منشیات اور دیگر نشہ آور ادویات دے کر گداگری کی طرف راغب کررہے ہیں۔ صوبائی وزیر نے مزید کہا کہ ان گداگربچوں کے پیچھے جرائم پیشہ افراد کے ملوث ہونے کی اطلاعات مل رہی ہیں۔

ہشام انعام اللہ نے کہا کہ عوام کی نشاندہی کے بعد گداگروں کے خلاف آپریشن شروع کیا گیا عوام سے اپیل ہے کہ وہ گداگروں کے پیچھے چھپے گروہ کی بھی نشاندہی کریں تاکہ ایسے عناصر کو بے نقاب کر کے قرار واقعی سزا دی جائے۔

وزیر سماجی بہبود کے پی نے کہا کہ بچوں کی زندگی سے کھیلنے اور اُن سے بھیک منگوانے والے گروہ کسی رعایت کے مستحق نہیں ہیں۔ آئی جی پولیس سے جلد اس معاملے پر میٹنگ کروں گا تاکہ منظم گروہ کو سامنے لایا جا سکے۔

  • This issue is not only in Peshawar its all over pakistan but no body is bothered about it as people who rent these kids pay their share to local curropt authorities who put a blind eye to this trade

  • the groom these kids, in order to run this scam.
    I saw once 12-14 yo boy beating up the smaller kids on street because they collected less money. That preteen boy most probably went through the same cycle. And theres nothing new about this. The incidence i witnessed happened 15 years ago. And it happened near a police van, who simply chose to ignore a 12 year boy dragging a 6 year old from footpath to the street by his foot.

    Bhang pee ker saray soyay hoay hain. her jaga scams chal rahay hain or koi kuch poochnay wala nahi.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >