لاہور میں قتل ہونے والی برطانوی نژاد لڑکی کے کیس میں پیش رفت

لاہور میں قتل ہونے والی برطانوی نژاد لڑکی کے کیس میں پیش رفت

لاہور کے پوش علاقے میں پرسرار طور پر قتل ہونے والی برطانوی نژاد لڑکی ماہرہ کے کیس میں پولیس نے لڑکی کی سہیلی سمیت 3 افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق پولیس نے قتل کے وقت مبینہ طور پر جائے وقوعہ پر موجود ماہرہ کی دوست کو گرفتار کرکے تھانہ ڈیفنس میں تفتیش شروع کی، ماہرہ کی سہیلی کے پولیس کو دیئے گئےبیان کے بعد مزید 2 افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔

پولیس نے 2 نامزد ملزمان کے علاوہ چار افراد کے خلاف ماہرہ کے قتل کا مقدمہ درج کیا ہے، تین افراد زیر حراست ہیں جن سے تفتیش جاری ہے جبکہ دو ملزمان ظاہر جدون اور سعد نے عبوری ضمانت کروارکھی ہے جس کی وجہ سے انہیں شامل تفتیش نہیں کیا جاسکا ہے۔

پولیس کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ماہرہ اپنی زندگی میں ہی کہہ چکی تھی کہ اس کی جان کو ان دونوں افراد سے خطرہ ہے، تاہم ضروری نہیں کہ قاتل ان دونوں افراد میں سے ہو قتل کسی اور شخص نے کیا ہو اس پہلو کو بھی خارج از امکان نہیں کیا جاسکتا ۔

واضح رہے کہ 3 مئی کو لاہور کے علاقے ڈیفنس میں لندن سے پاکستان آنے والے برطانوی شہریت رکھنے والے ماہرہ کی لاش اس کے گھر سے ملی جہاں وہ اپنی دوست کے ہمراہ رہائش پزیر تھی۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>