سعودی جیلوں میں قید پاکستانیوں کی واپسی کیلئے معاہدے پر دستخط

سعودی جیلوں میں قید پاکستانیوں کی واپسی کیلئے معاہدے پر دستخط، زلفی بخاری کی تصدیق

پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان وزیر اعظم عمران خان کے تین روزہ سعودی عرب کے دورے کے دوران سزا یافتہ قیدیوں کی منتقلی کے معاہدے پر دستخط ہوئے۔

دونوں ممالک نے سعودی پاکستان سپریم کوآرڈینیشن کونسل (ایس پی ایس سی سی) کے قیام ، منشیات میں غیر قانونی ٹریفک سے نمٹنے ، توانائی ، پن بجلی گھر ، بنیادی ڈھانچے ، نقل و حمل اور مواصلات ، اور آبی وسائل کی ترقی کے منصوبوں کی مالی اعانت کے بارے میں مفاہمت کی یادداشتوں پر بھی دستخط کیے۔ اور جرائم سے نمٹنے کے لئے ایک تعاون کا معاہدہ بھی کیا۔

یہ اعلان جمعہ سے اتوار تک وزیر اعظم کے دورے کے دوران ہفتے کے روز دیر سے جاری مشترکہ بیان میں کیا گیا۔ جس کی تصدیق اب معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانیز زلفی بخاری نے بھی کی ہے۔

معاون خصوصی نے کہا سعودی عرب کی جیلوں میں موجود 2 ہزار 107 پاکستانی قیدیوں کی ملک میں منتقلی سے متعلق معاہدے پر دستخط ہوئے ہیں۔ وہ وزیر اعظم عمران خان کے سرکاری دورے پر ان کے ہمراہ تھے۔

وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانیز نے معاہدے کی مزید تفصیلات فراہم کیے بغیر بتایا کہ معاہدے پر دستخط ہونے سے سعودی قیادت کے 2019 میں کیے گئے ایک وعدے پر کام تیز ہوگا۔

یاد رہے کہ سعودی فرمانروا محمد بن سلمان نے فروری 2019 میں پاکستان کا دورہ کیا تھا اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ایک ٹوئٹ میں کہا تھا کہ وزیر اعظم کی جانب سے سعودی جیلوں میں قید تقریباً 3 ہزار قیدیوں کی حالت زار پر توجہ دلائی گئی تھی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >