سابق بھارتی کرکٹر گوتھم گھمبیر کی فاؤنڈیشن کورونا دوا کی ذخیرہ اندوزی میں ملوث؟

بھارت کے سابق کرکٹ گوتھم گھمبیر کی فاؤنڈیشن پر کورونا وائرس کی دوا "فیبی فلو” ذخیرہ کرنے کے الزامات لگ گئے ہیں۔
بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق گوتھم گھمبیر بھارتی انتہا پسند جماعت بی جے پی کے رہنما ہیں اور اکثر و بیشتر پاکستان سمیت مسلمانوں کے خلاف زہر اگلتے دکھائی دیتے ہیں، مگر اس بار ان کے خبروں میں آنے کی وجہ ان کے بیانات نہیں بلکہ ان کی فاؤنڈیشن پر لگنے والے کورونا دوا کی ذخیرہ اندوزی کے الزامات ہیں۔
رپورٹس کے مطابق گوتھم گھمبیر کی فاؤنڈیشن نے کورونا وائرس کی دوا نہ صرف ذخیرہ کی بلکہ اس کی لوگوں تک ترسیل کو بھی ممکن بنایا، انہوں نے یہ کام خفیہ طور پر نہیں بلکہ اس کی تشہیر انہوں نے خود سوشل میڈیا اکاؤنٹس کے ذریعے کرتے ہوئے کہا کہ ان کے حلقے کے لوگ فاؤنڈیشن کے دفتر سے مفت دوا حاصل کرسکتے ہیں۔
فیبی فلو کی قلت کے باعث جب دہلی ہائی کورٹ نے ڈرگ کنٹرولر ڈیپارٹمنٹ کو اس معاملے کی تحقیقات کا حکم دیا تو اس تحقیقات کے دوران گوتھم گھمبیر کی فاؤنڈیشن کی جانب سے بنا ڈرگ لائسنس کے دوا لوگوں کو فراہم کرنے کا بھی انکشاف ہوا ۔
جس کے بعد ڈرگ کنٹرولر نے دہلی ہائی کورٹ کو اس پیش رفت سے متعلق آگاہ کرتے ہوئے گوتھم گھمبیر کی فاؤنڈیشن کے خلاف بنا کسی تعطل کے کارروائی کا اعلان کردیا، دہلی ہائی کورٹ نے اس معاملے پر 6 ہفتوں میں رپورٹ طلب کرلی ہے۔
واضح رہے کہ بھارت میں فینی فلو نامی اس دوا کو کورونا کے خلاف استعمال کرنے اجازت دی گئی تھی ، تاہم ملک میں کورونا کی بدترین صورتحال کے باعث اس دوا کی طلب میں اس قدر اضافہ ہوا کہ ملک میں اس کی قلت پیدا ہوگئی ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>