ملالہ یوسف زئی کو قتل کرنے کی دھمکی دینے والے مذہبی رہنماگرفتار

دنیا کی کم عمر ترین نوبل انعام یافتہ پاکستانی طالب علم ملالہ یوسف زئی کو خود کش حملے میں قتل کرنے کی دھمکی دینے والے مذہبی رہنما کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق خیبر پختونخوا کے علاقے نوشہرہ سے تعلق رکھنے والے ایک مذہبی رہنما مفتی سردار علی حقانی نے تقریر کے دوران ملالہ یوسف زئی کو دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ اگر ملالہ پاکستان آئیں تو وہ خودکش حملہ کرکے انہیں قتل کردیں گے۔

رپورٹ کے مطابق لکی مروت کے ایک پولیس اسٹیشن میں مذہبی رہنما مفتی سردار علی حقانی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی درخواست موصول ہوئی جس میں کہا گیا کہ مفتی صاحب نے پشاور کے علاقے واحد گھڑی میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ملالہ یوسف زئی کو جان سے مارنے کی دھمکی دی۔

درخواست میں مزید کہا کہ اس تقریر کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی جس میں مفتی صاحب کو اسلحہ کے ہمراہ سٹیج پر کھڑے ہوکر لوگوں کو قانون اپنے ہاتھ میں لینے اور ملالہ پر خود کش حملہ کرنے کی ترغیب دیتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

پولیس حکام کے مطابق مفتی صاحب کو منگل کی رات اسی جگہ سے گرفتار کرکے ان کے خلاف معاشرے میں نفرت پھیلانے کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ مفتی سردار علی حقانی کی ماضی میں ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں وہ لوگوں کو کورونا وائرس کی ایس او پیز پر عمل کرنے سے روک رہے تھے، نوشہرہ پولیس نے انہیں اس ویڈیو کے بعد گرفتار کرلیا تھا۔

تاہم بعد میں ان کی ایک اور ویڈیو سامنے آئی جس میں لوگوں کو ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کرنے کی ترغیب دیتے دکھا ئی دیئے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >