فرانسیسی صدر کو تھپڑ مارنے والے شخص سے متعلق تفصیلات منظرعام پر

فرانسیسی پولیس نے صدر ایماونئل میکرون کو تھپڑ رسید کرنے والے شخص سے متعلق تفصیلات جاری کی ہیں۔

بین الاقوامی میڈیاکے مطابق زیرحراست ملزم کی شناخت 28 سالہ ڈیمن ٹیرل کے نام سے ‏ہوئی ہے جو قوم پرست دائیں بازو کے نظریات سے متاثر تھا۔ ملزم ڈیمن انتہا پسندوں کے فکر و نظریات ‏کے زیرِ اثر تھا اور ان کے کئی یوٹیوب چینلز سبسکرائب کر رکھے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ فرانسیسی صدر کو تھپڑ مارنے والا شخص ڈیمین ٹیرل انارکی پسند اور پرانے خیالات کا مالک ہے۔

رپورٹ کے مطابق ملزم کی تلاشی کے دوران پولیس کو 28 سالہ شخص کے گھر سے نازی رہنما ہٹلر کے منشور پر مشتمل سوانح عمری، اسلحہ، فوجی گیمز اور سویت فلیگ ملا ہے۔

ابتدائی تفتیش کے بعد پولیس نے بتایا کہ ملزم کا کوئی کرمنل ریکارڈ نہیں تھا وہ پہلے کبھی گرفتار ‏بھی نہیں ہوا تھا۔

ڈیمن ٹیرل قدیم مارشل آرٹس سکھانے والے کلب سے وابستہ ہے اور روایتی تلوار بازی کا بھی ‏شوقین ہے، وہ مقامی طور پر مارشل آرٹس کا کلب بھی چلاتا ہے۔پولیس کی تلاشی کے دوران ملزم کے گھر سے قرون وسطیٰ کے لباس بھی برآمد ہوئے ہیں۔

ملزم کو مزید ایک اور دن پولیس کی تفتیش میں رکھا جائے گا جس کے بعد ممکنہ طور پر عوامی ‏شخصیت پر حملے کا چارج لگایا جائے گا جس کے تحت زیادہ سے زیادہ 3 سال قید اور 45 ہزار ‏یوروز جرمانہ ہو سکتا ہے۔

واضح رہے کہ 2 روز قبل ڈیمین نے فرانسیسی صدر میکرون کو تھپڑ رسید کرنے سے پہلے ‘مردہ باد میکرون‘ کا نعرہ بھی لگایا تھا جس پر پولیس نے اسے حراست میں لے لیا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >