فرانسیسی صدر کو تھپڑ مارنے والے شخص کو 4 ماہ قید کی سزا

فرانس کے صدر ایمانوئل میکرون کو تھپڑ مارنے والے شخص کو عدالت نے 4 ماہ قید کی سزا سنادی ہے۔
بین الاقومی میڈیا رپورٹس کے مطابق فرانسیسی صدر کو تھپڑ مارنے والے 28 سالہ ڈیمن ٹیرل کے خلاف عوامی شخصیت کو تھپڑ مارنے کے الزام کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا جس پر آج عدالت میں سماعت ہوئی۔
عدالت نے ملزم پر الزامات ثابت ہونے کے بعد اسے 4 ماہ قید کی سزا سنادی اور ساتھ ہی 14 ماہ کیلئے معطلی کے احکامات بھی سنادیئے۔
عدالتی حکم کے مطابق ملزم پر 5 سال تک کسی سرکاری ادارے کو چلانے یا ہتھیار رکھنے کی بھی پابندی عائد ہوگی۔
تفتیش کے دوران ملزم کا دائیں بازو کی قوم پرست نظریات سے متاثر ہونے اور انتہا پسندوں کے کئی یوٹیوب چینلز سبسکرائب کرنے کا بھی انکشاف ہوا۔
تاہم پولیس کے مطابق ملزم کے خلاف اس سے قبل کوئی کرمنل ریکارڈ نہیں ملا اور نہ ہی ملزم اس سے قبل کسی مقدمے میں گرفتار ہوا ہے۔
واضح رہے کہ 8 جون کو جنوبی فرانس کے شہر ڈروم کے دورے کے موقع پر فرانسیسی صدر ان کے استقبال کیلئے جمع ہونے والے شہریوں سے بیریئر کے پیچھے سے ملاقات کررہے تھے کہ شہریوں کے درمیان موجود ایک شخص نے ان کے چہرے پر تھپڑ رسید کرڈالا، صدر کی سیکورٹی پر معمور اہلکاروں نے فوری طور پر حملہ آور کو گرفتارکرلیا تھا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >