بجٹ،کیا سستا کیا مہنگا ہوا؟خواتین کو مہنگے میک اپ کا جھٹکا،جان بچانے والی ادویات سستی

وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں جہاں عوام کو ریلیف دیا،وہیں عوام پر مہنگائی کا بوجھ بھی ڈالا،وفاقی بجٹ میں انڈے، کھانے کے تیل،گھی، نمک،مختلف اقسام کے اناج،مکھن،دیسی گھی، دہی، پنیر،گوشت مختلف اقسام کے اچار،بائی سائیکل،جہاز، ٹرینر ایئر کرافٹس اور ان کے اسپیئر پارٹس سمیت درجنوں اشیا پر سیلز ٹیکس کی چھوٹ ختم کرنے کی تجویز دی گئی،جس سے دودھ، دہی جوسز، گھی، آیوڈائز نمک، ٹیبل سالٹ، دیسی گھی اور استعمال کی دوسری اشیا مہنگی ہونے کا امکان ہے۔

وفاقی بجٹ 2021-22 میں کاسمیٹکس، بچوں کی ٹافیاں ، چاکلیٹس، سونا، چاندی، دودھ اور فروزن میٹ مہنگا ہو گیا،لگژری آئٹمز، درآمد ہونے والی تمام اشیا مہنگی ہوگئیں،جان بچانے والی 6 ادویات، خود تلف ہونے والی سرنجز اور آکسیجن سلنڈر سستے ہوئے،موبائل فون سستے،آئی ٹی سروس کی برآمدات کو زیرو ریٹنگ کی سہولت فراہم کردی گئی،پھلوں کے رس، قرآن پاک کی اشاعت کے لیے معیاری کاغذ اور تیار شدہ فوڈ سپلیمنٹ بھی سستا ہوگیا۔

بجٹ میں کیا سستا کیا مہنگا ہوا؟کاسمیٹکس، بچوں کی ٹافیاں اور چاکلیٹس مہنگی ـ سونا، چاندی، دودھ اور فروزن میٹ بھی مہنگا

Posted by 92 News HD Plus on Friday, June 11, 2021

اجناس کی اسٹوریج کیلئے استعمال ہونیوالے مخصوص بیگز بھی سستے، اسٹین لیس اسٹیل اور ایچ آر سی سے متعلقہ فلیٹ رولڈ مصنوعات بھی سستی ہوگئیں،ای کامرس کو سیلز ٹیکس نیٹ میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا،آئی ٹی زون کیلئے پلانٹ،مشینری،سازو سامان اور خام مال پر ٹیکس چھوٹ کی تجویز دے دی گئی۔

حکومت نے وفاقی بجٹ 2021-22 چھوٹی گاڑیاں سستی کرنےکی سفارش کردی،بجٹ میں 850 سی سی سے چھوٹی گاڑیوں پر ٹیکس کم کرنے جبکہ چھوٹی گاڑیوں پر سیلز ٹیکس ، ایکسائز ڈیوٹی اور ایڈیشنل کسٹمز ڈیوٹیاں کرنے کی تجویز دی گئی،جس سے ممکنہ طور پر گاڑیوں کی قیمتوں میں کمی کا امکان ہے۔

نئےموٹرسائیکل کے برانڈز پر ٹیکس کم کرنے اور ٹریکٹرز کے نئے ماڈلزپر بھی ٹیکس کم کرنے کی بھی تجویز دی گئی، جبکہ بجٹ میں ایکسپورٹ سیکٹر میں بھی خاصی مراعات دی جائیں گی،سستا خام مال دستیاب ہونے سے پیداواری لاگت کم ہوجائے گی اور کم لاگت مصنوعات بننے سے ملکی برآمدات کی کھپت بڑھ جائے گی۔

وفاقی بجٹ 22-2021 میں موبائل فون پر ود ہولڈنگ ٹیکس کی شرح میں کمی جبکہ فون کالز، انٹرنیٹ ڈیٹا اور ایس ایم ایس پر فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی میں اضافے کی تجویز دی گئی،وزیر خزانہ شوکت ترین کی جانب سے قومی اسمبلی میں پیش کردہ بجٹ 22-2021 میں کہا گیا کہ موبائل سروسز پر موجودہ ودہولڈنگ ٹیکس شرح 12.5 فیصد ہے،عام شہری پر بوجھ کو کم کرنے کے لیے تجویز ہے کہ اگلے مالی سال کے لیے اس شرح کو کم کرکے 10 فیصد کردیا جائے۔

بجٹ میں تنخواہ دار طبقے پر کوئی ٹیکس نہیں لگے گا،کم لاگت گھروں کیلیے سستا قرض اور کسانوں کو بلا سود قرض فراہم کیے جائیں گے،جس سے تعمیر کے شعبے میں ترقی کی نئی راہیں کھلنے اور زرعی اجناس سستی ہونےکا امکان ہے۔

  • جو چیزیں سستی کرنی تھی وہ مہنگی کر رہے ہیں اور جو سستی کرنی تھی وہ مہنگی کر رہے ہیں۔ کھانے کی تمام اشیاء سستی کریں آپ گاڑیاں سستی کر رہے ہیں

  • اللہ کے لیا کھانے کی تمام اشیاء کو سستی کریں اور گاڑیاں جیتنی مرضی مہنگی کر دیں
    🙏🙏🙏🙏🙏


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >