اچھی خبر ، جلد پاکستان میں پہلی قومی ایمرجنسی ہیلپ لائن 911 کا آغاز

ملک میں پہلی مرتبہ امریکہ اور دیگر ترقی یافتہ ممالک کی طرز پر قومی ایمرجنسی ہیلپ لائن کا افتتاح 25 جولائی کو کیے جانے کا امکان ہے۔

پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ایک قومی ایمرجنسی ہیلپ لائن 911 کا قیام عمل میں آچکا ہے جس کے افتتاح کی تاریخ بھی سامنے آگئی ہے۔نجی خبررساں ادارے ڈان نیوز نے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ 25 جولائی کو اس سروس کے افتتاح کا امکان ہے، تاہم اب تک حتمی طور پر افتتاح کی تاریخ سامنے نہیں آئی ہے۔

اب اس سروس سے متعلق تھوڑا تفصیلی جائزہ لیتے ہیں، وفاقی حکومت نے اس منصوبے پر کام لاہور سیالکوٹ پر ایک خاتون کو اس کے بچوں کے سامنے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنائے جانے کے بعد شروع کیا کیونکہ اس واقعے میں متاثرہ خاتون متعدد ہیلپ لائنز ٹرائے کرتی رہی مگر اس تک مدد نہ پہنچ سکی۔

وزیراعظم عمران خان نے اس واقعے کے بعد ایک بیان میں قومی ایمرجنسی ہیلپ لائن کے قیام کا عندیہ دیا تھا جس کے تحت لوگوں تک ملک کے کسی بھی کونے میں کسی بھی ادارے کی مدد تک فوری رسائی ممکن بنائی جاسکے۔ نیشنل ایمرجنسی ہیلپ لائن کی اس سروس کو امریکہ میں دستیاب ہیلپ لائن سروس کے خطوط پر استوار کیا گیا اور اس کا ڈائلنگ نمبر بھی امریکہ ہی طرح 911 ہی مقرر کیا گیا، حالانکہ ابتداء میں اس ہیلپ لائن کیلئے”786″ ڈائلنگ نمبر رکھنے کی تجویز بھی زیر غور تھی۔

منصوبے کے فوکل پرسن عادل صافی نے اس کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ اس ہیلپ لائن کو شروع کرنے کیلئے ہمارے ماہرین نے امریکہ، برطانیہ اور دیگر ممالک میں دستیاب ہیلپ لائنز کے ماڈلز کا جائزہ لیا۔ پاکستان میں اس ہیلپ لائن کو وزارت داخلہ کے تحت قائم کیا گیا جس کا ہیڈ آفس اسلام آباد میں نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر(این سی او سی) میں قائم کیا گیا ہے،ہیلپ لائن کو چلانے کیلئے آپریٹرز بھرتی کیے جائیں گے جو این سی او سی کے سینٹرل کنٹرول روم سے کام کریں گے۔

فوکل پرسن عادل صافی کا کہنا تھا کہ اس ہیلپ لائن کے ساتھ تمام ہنگامی نمبروں کو منسلک کردیا جائے گا،شہریوں کی ایمرجنسی کالز سینٹر کنٹرول روم میں موصول ہوں گی جہاں سے انہیں فوری طور پر متعلقہ محکموں کو منتقل کردیا جائے گا، ابتدائی طور پر قومی ہیلپ لائن 4 قسم کی ہنگامی صورتحال کیلئے دستیاب ہوگی جس میں پولیس ، فائر بریگیڈ، ایمبولینس سروس موٹروے و ہائی وے پولیس شامل ہوں گی۔

اس ہیلپ لائن سے رابطہ کرنے کیلئے ملک کے کسی بھی حصے سے شہری کو اپنے موبائل فون سے صرف 911 ڈائل کرنا ہوگا اور اس کا رابطہ ہیلپ لائن کے آپریٹر سے ہوجائے گا۔عادل صافی کا کہنا تھا کہ ہم نے صوبوں کے ساتھ مل کر 911 کے قیام کیلئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دیدی ہے، اس حوالے سے صوبوں کے ساتھ اہم اور آخری ملاقات اگلے ہفتے طے ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس ہیلپ لائن کو چلانے کیلئے صوبوں کو تربیت یافتہ عملے اور آپریٹرز کے تقرر اور اپنے دائرہ اختیار میں کنٹرول رومز قائم کرنے کی ہدایات جاری کردی ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >