قومی اسمبلی ہنگامہ آرائی، اپوزیشن کا اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کا فیصلہ

قومی اسمبلی ہنگامہ آرائی، اپوزیشن کا اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کا فیصلہ

پارلیمنٹ میں گزشتہ روز ہونے والی ہنگامہ آرائی کے بعد اطلاعات موصول ہورہی ہیں کہ اپوزیشن جماعتوں نے اسپیکر اسد قیصر کو عہدے سے ہٹانے کیلئے کوششیں شروع کردی ہیں۔

خبررساں ادارے نے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ متحدہ اپوزیشن کا ایک اجلاس ہوا جس میں اسپیکر اسد قیصر کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانےپر اتفاق کیا گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق متحدہ اپوزیشن نے اس فیصلے کو عملی جامہ پہنانے کیلئے باقاعدہ ایک کمیٹی تشکیل دینے پر اتفاق کرتے ہوئے کمیٹی میں شریک اراکین کے ناموں پر مشاورت بھی کی ہے۔

اس کمیٹی کو اسد قیصر کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے اور اس حوالے سے تمام امور کی ادائیگی کا ٹاسک دیا جائے گا۔

متحدہ اپوزیشن کے اجلاس میں رہنماؤں نے اسپیکر اسد قیصر کی جانب سے 7 اراکین اسمبلی پر پابندی عائد کرنے کے فیصلے کو مسترد کیا اور موقف اختیار کیا کہ اسپیکر کا فرض ہوتا ہے کہ وہ ہر رکن اسمبلی کا تحفظ کرے، اسد قیصر یہ ذمہ داری نبھانے میں ناکام رہے ہیں۔

اپوزیشن رہنماؤں نے اتفاق کیا کہ اسپیکر آئینی و قانونی، جمہوری اور پارلیمانی فرائض سرانجام دینے میں مکمل طور پر ناکام رہے ہیں، کل کا دن پاکستان کی جمہوری تاریخ میں سیاہ دن کے طور پر یاد رکھا جائے گا،
متحدہ اپوزیشن نےمطالبہ کیا ہے کہ گزشتہ روز ہونے والے واقعہ پر یکساں نمائندگی کی بنیاد پر کمیٹی تشکیل دی جائے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز پارلیمنٹ اجلاس کے دوران ہونے والی ہنگامہ آرائی میں ملوث 7 اراکین اسمبلی کے پارلیمنٹ میں داخلے پر پابندی عائد کردی تھی، جن اراکین پر پابندی عائد کی گئی ان میں علی گوہر، چوہدری حامد حمید، شیخ روحیل اصغر، فہیم خان، عبدالمجید خان، علی نوازاعوان اور سید آغا رفیع اللہ شامل ہیں۔

  • ڈپٹی اسپیکر کے خلاف تو عدم اعتماد کی درخواست دیکر واپس لے لی ، اب یہ اسپیکر کے خلاف عدم اعتماد لائیں گے

    لعنتی اپوزیشن


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >