وزیر اعظم کا ہراسانی کیس پر کارروائی نہ کرنے والے ایف آئی اے اہلکاروں کی معطلی کا حکم

وزیراعظم عمران خان نے وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کے سربراہ کو ہدایت کی ہے کہ خاتون کی ہراسانی کی شکایت کو نظر انداز کرنےو الے افسر کو معطل کرکے فوری تحقیقات کی جائیں۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ایک خاتون نے پانچ بار ایف آئی اے میں جنسی ہراسانی کے خلاف شکایت نظر انداز ہونے کے بعد وزیراعظم عمران خان کے قائم کردہ پاکستان سیٹیزن پورٹل پر شکایت درج کروائی۔

وزیراعظم کی ڈی جی ایف آئی اے کو شفاف انکوائری کیلئے متعلقہ افسران کو معطل کرنے کی ہدایت

وزیراعظم کی ڈی جی ایف آئی اے کو شفاف انکوائری کیلئے متعلقہ افسران کو معطل کرنے کی ہدایت

Posted by GNN on Tuesday, June 22, 2021

 

وزیراعظم آفس کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق خاتون نے سیٹیزن پورٹل پر اپنی درخواست میں کہا کہ دسمبر 2019 سے جون 2021 تک ایف آئی اے میں پانچ بار شکایت کی مگر کوئی سنوائی نہیں ہوئی جس کے بعد متاثرہ خاتون کو یونیورسٹی سے اپنی نوکری سے بھی ہاتھ دھونا پڑا۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ  خاتون نے اپنی شکایات کے نظر انداز ہونے اور مسلسل ہراسانی کا شکار رہنے کی وجہ سے اپنی جان لینے کی کوشش بھی کی۔

وزیراعظم آفس کے مطابق 2 بار شکایت کو کھولے جانے کےباوجود ایف آئی اے معاملے کو کسی منطقی انجام تک پہنچانے میں ناکام رہی جس پر وزیراعظم عمران خان نے ایف آئی اے کے ڈائریکٹر جنرل ثنااللہ عباسی کو حکم دیا کہ متعلقہ افسر کو فوری طور پر معطل کردیا جائے۔

وزیراعظم کے مطابق واقعہ کی فوری طور پر انکوائری کرکے متاثرہ خاتون کو انصاف مہیا کیا جائے اور آئندہ ایسی کسی شکایت کو نظر انداز نہ کیا جائے۔وزیراعظم پرفارمنس ڈیلوری یونٹ نے بھی ثنا اللہ عباسی کو خط تحریر کیا جس میں کہا گیا ہے کہ متعلقہ افسران کے خلاف انکوائری مکمل کرکے20 جولائی تک اس کی رپورٹ وزیراعظم آفس میں جمع کروائیں۔

  • FIA high ups will soon give clean chit to their subordinate officers. After sometime, these suspended officers will be restored and PM’s office wouldn’t know this. Every department/institution in Pakistan gives complete protection to its own employees. There are very few exceptions to the above mentioned rule-of-thumb in Pakistan.

    The reason that all these suspensions ( in Police, FIA, Customs, FBR etc.) bear no effect on the conduct of their employees is that 99% of the time the suspended ones are restored with full financial benefits.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >