لڑکا ، لڑکی پر تشدد کیس : عثمان مرزا سمیت دیگر ملزمان کو جیل بھیج دیا گیا

وفاقی دارلحکومت میں لڑکے اور لڑکی کو ہراساں کرنے اور ان پر تشدد کے کیس میں گرفتار مرکزی ملزم عثمان مرزا اور دیگر ملزمان کو عدالت نے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں ڈیوٹی جج میاں اظہر ندیم نے اسلام آباد کے ای الیون میں جوڑے کو ہراساں کرنے اور تشدد کا نشانہ بنانے کے کیس کی سماعت کی۔

مرکزی ملزم عثمان مرزا اوردیگر ملزمان کو پولیس نے منگل کو عدالت میں پیش کیا گیا۔

پولیس کی جانب سے مرکزی ملزم عثمان مرزا کو 4 روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔ دیگر ملزمان فرحان، ادارس اور حافظ عطاء کو بھی عدالت میں پیش کیا گیا۔

سماعت کے دوران ڈیوٹی جج اظہر ندیم نے ریمارکس دئیے کہ ملزمان 30 جولائی تک جیل میں رکھا جائے۔ عدالت نے چاروں ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

واضح رہے کہ پولیس نے جوڑے کو ہراساں اور ان پر تشدد کرنے والے ملزمان کے موبائل سے ویڈیوز برآمد کی تھیں جو وفاقی تحقیقاتی ایجنسی کے حوالے کردیئے گئے۔

تفتیشی افسر کا کہنا تھا کہ لڑکی کو برہنہ کر کے زیادتی کروانے کی کوشش کی گئی۔ اور تین افراد ڈھائی گھنٹے تک ویڈیو بناتے رہے۔

تحقیقات میں انکشاف ہوا ہے کہ جوڑے کو ہراساں اور ان پر تشدد کرنے والے مرکزی ملزم عثمان مرزا سمیت دیگر ملزمان متاثرہ لڑکی کو بلیک میل کرکے مختلف مواقع پر 13 لاکھ روپے لے چکے ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>