نور مقدم کا قتل کہاں ہوا ، پولیس نے جائے وقوعہ کی تصاویر جاری کر دیں

نور مقدم کا قتل کہاں ہوا ، پولیس نے جائے وقوعہ کی تصویر جاری کر دی

تفصیلات کے مطابق آئی جی اسلام آباد نے تھانہ کوہسار کے علاقے ایف سیون فور میں خاتون کےقتل پر سینئیر افسران کے ہمراہ جائے وقوعہ کا معائنہ کیا۔اب تک کی جانے والی تحقیقات کی پیشرفت کا جائزہ لیا اورخصوصی تفتیشی ٹیم تشکیل دی.تفتیشی ٹیم میں ایس ایس پی انوسٹیگیشن,ایس پی سٹی اور اےایس پی کوہسار شامل ہی

پولیس کی جانب سے جاری تصویر میں نظر آنے والے کمرے میں نور مقدم کے خون کے دھبے دیکھے جا سکتے ہیں جبکہ سامان بکھرا پڑا ہے۔

پولیس کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ آئی جی اسلام آباد نے تھانہ کوہسار کی حدود میں آنے والے علاقے ایف سیون فور میں سینئر افسران کے ہمراہ جائے وقوعہ کا دورہ کیا اور پیشرفت سے آگاہ کیا۔

آئی جی اسلام آباد کی تشکیل کردہ ٹیم میں ایس ایس پی انویسٹی گیشن اور ایس پی سٹی، اے ایس پی کوہسار شامل ہیں ۔

دوسری جانب اسلام آباد میں 28 سالہ لڑکی کے بہیمانہ قتل کیس کے ملزم ظاہر جعفر کا برطانیہ میں کریمنل ریکارڈ سامنے آگیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق ملزم کا انگلینڈ میں بھی کریمنل ریکارڈ موجود ہے ، ملزم وہاں تین ماہ جیل کاٹ چکا ہے۔ملزم ماضی میں اپنی والدہ اور چھوٹے بھائی پر بھی تشدد کرچکا ہے۔

ایس ایس پی انویسٹی گیشن کا کہنا تھاکہ لڑکی کے قتل کے ملزم ظاہر کو موقع واردات سے گرفتار کیا گیا، گرفتار ملزم ظاہر جعفر ایک کاروباری فیملی سے تعلق رکھتا ہے برطانیہ سے تعلیم حاصل کرکے پاکستان آیا۔

ایس ایس پی انویسٹی گیشن نے کہا ہے کہ گرفتاری کے وقت ملزم نشے میں نہیں تھا جب ملزم کو گرفتار کیا وہ ہوش و حواس میں تھا

پولیس کے مطابق ملزم کے گھر سے آہنی کلپ، خون آلود چاقو ، پستول اور 100 سے زائد گولیاں برآمد کرلی گئیں۔ایک پستول برآمد ہوا جس میں گولی پھنسی ہوئی تھی، ملزم سے پسٹل برآمد ہوا ہے، تفتیش میں فائرنگ سامنے نہیں آئی، گولی پھسنے کی وجہ سے پسٹل نہیں چلا۔

پولیس کے مطابق مقتولہ کو پہلے ذبح کیا اور بعدازاں سر تن سے جدا کردیا۔ مقتولہ کچھ عرصے سے ملزم ظاہر کے ساتھ رہ رہی تھی۔

پولیس کے مطابق دورانِ تفتیش ملزم پولیس کو بھٹکانے کی کوششیں کررہا ہے، کیس سے ہٹ کر غیر ضروری باتیں کر رہا ہے۔ملزم بحالی سینٹر میں رہا یا نہیں ہمیں اس سے کوئی واسطہ نہیں۔

  • یہ عوام کے ٹیکس کے پیسے سے تنخواہ لینے والے کلف کا سوٹ پہنے آئی جی صاحب کسی غریب کے ساتھ ہونے والے واقعہ پر بھی اتنی دلچسپی کا اظہار فرماتے ہیں کبھی

  • Burey Kaamo ka bura inkaam simple.Larki ka baap b utna he qasoor war hai jitna k qatil aur maqtool. maana k larki independent thi baalig thi, but aap hien to muslim aur pakistan jese muaashre mein reh rahe hein, jaha bina shaadi k larki aur larkey ka aik saath rehna pasand nahi keeya jata. Na hamara mazhab, na hamara qanoon iss ke ijazat deta hai.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >