پنجاب حکومت کی مہربانی سےمجرم کی قبل ازوقت رہائی،خدیجہ صدیقی کو خدشات لاحق

2016 میں ایل ایل بی کی طالبہ خدیجہ صدیقی کو چھریاں مار کر زخمی کرنے والے مجرم شاہ حسین کو رہا کردیا گیا ہے، خدیجہ صدیقی نے  مجرم کی رہائی کے حوالے سے اپنا موقف پیش کردیا ہے۔

مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر  خدیجہ صدیقی نے اپنے بیان میں کہا کہ بہت سے لوگ  ہائی کورٹ کے حکم پر سوالات اٹھارہے ہیں، تاہم یہاں یہ وضاحت ضروری ہے کہ مجرم کی  قبل از رہائی معافی کیلئے عدالت سے رجوع کیا گیا جسے مسترد کردیا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ تاہم پنجاب حکومت نے مجرم کو  پہلے ہی  غیر معمولی طور پر ڈیڑھ سال کی سزا معافی دیدی ہے، جسٹس شان گل نے ایسا کوئی حکم جاری نہیں کیا لہذا ان کے خلاف  بیان بازی بند کی جائے۔

خدیجہ صدیقی نے کہا کہ میرے مجرم کی رہائی میں معزز جج کا کوئی کردار نہیں ہے، کیا ریاست اپنی خاموشی توڑتے ہوئے جیل انتظامیہ کا احتساب کرنا پسند کرے گی؟

واضح رہے کہ 2016 میں خدیجہ صدیقی کو چھریوں کے وار سے زخمی کرنے والے  ان کے کلاس فیلو شاہ حسین کو   سپریم کورٹ نے 5 سال قید کی سزا سنائی تھی تاہم جمعرات کو ان کی ساڑھے تین سال قید مکمل ہونے کے بعد انہیں سزا معافی کے بعد رہا کردیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ 3 مئی 2016ء کو خدیجہ اپنی چھوٹی بہن کو شملہ پہاڑی کے قریب اسکول سے لینے گئی تھی، ڈیوس روڈ پر شاہ حسین نے اس پر چھریوں سے حملہ کر دیا اور 23 وار کرکے اسے شدید زخمی کر دیا تھا۔

تحقیقات مکمل ہونے پر شاہ حسین کو جوڈیشل مجسٹریٹ نے 29 جولائی2017ء کو 7 سال قید کی سزا سنا دی۔بعدازاں شاہ حسین کے اہلخانہ نے اپیل کی تو عدالت نے سزا 2 سال کم کرکے 5 سال کردی لیکن جون 2018ء میں لاہور ہائی کورٹ نے سزا ختم کر کے شاہ حسین کو بری کر دیا تھا۔

جس پر سابق چیف جسٹس سپریم کورٹ ثاقب نثار نے شاہ حسین کی رہائی کا نوٹس لے لیا، بعدازاں جنوری2019ء میں سابق چیف جسٹس آصف کھوسہ کی سربراہی میں بنائے گئے بنچ نے لاہور ہائیکورٹ کا بریت کا حکم کالعدم قرار دیتے ہوئے شاہ حسین کی 5 سال قید کی سزا بحال کردی۔

    • oye yeah aisi harramzadi qoum paida hogai hay jo agar baajwa ya khan tatti bhi karayga tou ussay halwa keh k kha layn gay, behnchod aisi inki gaand maari hay molvio nay k inko sahi aur ghalat ki samj khatam hogai hay. oye behn k looro, ab bolo pti govt k khilaf k jisnay abhi ttak koi action nhi liya, yahan rundi k bachay sara din tax k paison say twitter pay apni yawaatay rehtay hayn

  • سیاست ڈاٹ پی کے پر یہ دن بھی آنا تھا کہ ان کے بلاگرز کو پنجاب حکومت اور لاہور ھاہیکورٹ میں فرق ہی معلوم نہیں۔ ٖفٹے در در۔۔۔

  • ایک تلخ حقیقت یہ ہے کہ پاکستان کو خواتین کے لیے تنگ کیا جا رہا ہے ۔ خواتین کے خلاف جرائم میں ملوث افراد کو یا تو سزا دی ہی نہیں جاتی اور اگر دی بھی جاے تو کرپشن ذدہ نظام اسےجلد رہا کر دیتا ہے اور یہ عمل دوسروں کو جرائم پر ابھارتا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >