زندہ دیکھنا ہےتو مجھے تلاش نہ کیا جائے،نور مقدم کیس میں مزید انکشافات سامنے آ گئے

 زندہ دیکھنا ہےتو  مجھے تلاش نہ کیا جائے،نور مقدم کیس میں مزید انکشافات سامنے آ گئے

نور مقدم قتل کیس میں سنسنی خیز انکشافات سامنے آگئے، قتل والے دن نور مقدم نے اپنے خاندان سے رابطہ کر کے تلاش نہ کرنے کی درخواست کی تھی۔

تفصیلات کے مطابق نور مقدم کے خاندان کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ قتل کے روز نور نے اپنے خاندان سے رابطہ کیا تھا اور کہا تھا کہ اگر انہیں زندہ دیکھنا ہےتو ان کو تلاش نہ کیا جائے نہ ہی پولیس سے رابطہ کیا جائے۔

نور مقدم کے خاندانی ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم ظاہرجعفر پہلے بھی نور پر کئی بار تشدد کر چکا تھا جس کی وجہ سے نورمقدم گزشتہ 2 سال سے ذہنی اذیت میں مبتلا تھی۔

نور کے خاندان کا مزید کہنا تھا کہ ملزم ظاہرجعفر کو نورمقدم کا مذہبی رحجان بھی پسند نہیں تھا اور قتل ‏والےدن نورمقدم نے اپنے خاندان سےرابطہ کر کے ان کو پیغام دیا تھا کہ مجھے زندہ دیکھنا ہےتو تلاش کرنا نہ پولیس سے رابطہ کرنا۔

پولیس کے مطابق نورمقدم قتل کیس کے ملزم ظاہرجعفر کا پنجاب فرانزک سائنس لیب میں پولی گرافک ٹیسٹ ماہرین کی زیر نگرانی کیا گیا، ٹیسٹ میں ‏ظاہرجعفر سے20 سوالوں کے جواب لیےگئے اور ٹیسٹ کی رپورٹ اسلام آباد ‏پولیس کو بھجوائی جائے گی جبکہ سی سی ٹی وی فوٹیج کی فارنزک جانچ بھی کی گئی۔

واضح رہے کہ گذشتہ روز اسلام آباد کی مقامی عدالت نے نور مقدم قتل کیس کے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے ‏جسمانی ریمانڈ میں مزید تین دن کی توسیع کر کے پولیس کے حوالے کردیا تھا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >