ایم پی اے نذیر چوہان نے شہزاد اکبر سے معافی مانگ لی ، ہسپتال سے ویڈیو پیغام

تحریک انصاف کے رکن پنجاب اسمبلی نذیر چوہان اور وزیر اعظم کے مشیر شہزاد اکبر کے درمیان جاری جھگڑا ٹھنڈا پڑ گیا، نذیر چوہان نے بالآخر شہزاد اکبر سے معافی مانگتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اپنے عقیدے کی وضاحت کردی ہے۔ شہزاد اکبر نے اپنا بیان دے دیا اور انہیں ختم نبوت پر مکمل یقین ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایم پی اے نذیر چوہان جن کا تعلق جہانگیر ترین گروپ سے ہے وہ سائبر قوانین کے تحت ایف آئی اے کی زیر حراست میں ہیں، رہنما تحریک انصاف کو دل کے مسائل پیدا ہوئے جس پر پی آئی سی اسپتال لاہور لایا گیا۔

پی آئی سی میں دوران علاج انہوں نے ایک ویڈیو پیغام جاری کیا جس میں کہا کہ شہزاد اکبر نے اپنا بیان دے دیا اور انہیں ختم نبوت پر مکمل یقین ہے۔ نذیر چوہان نے مزید کہا کہ کسی کو کافر کہنے کا کوئی حق نہیں ہے، انہوں نے شہزاد اکبر سے ان کے مذہبی عقائد کو ٹھیس پہنچانے پر معذرت کی اور دعا کی کہ وہ اور ان کے اہل خانہ خوش رہیں۔

یاد رہے کہ نذیر چوہان نے 19 مئی کو ایک ٹاک شو میں شہزاد اکبر کے عقیدے کے بارے میں الزام لگایا اور مطالبہ کیا تھا کہ انہیں وزیر اعظم کے احتساب و داخلہ کے مشیر کے عہدے سے استعفیٰ دینا چاہیے۔ جس کے بعد شہزاد اکبر نے اگلے ہی روز لاہور کے ریس کورس تھانے میں ایک درخواست جمع کرائی اور 29 مئی کو لاہور آنے پر ایف آئی آر درج کرائی۔

ریس کورس پولیس نے نذیر چوہان کو ایل ڈی اے کے دفتر سے گرفتار کیا، لیکن بعد میں جوڈیشل مجسٹریٹ نے انہیں ضمانت دے دی۔ نذیر چوہان پر شہزاد اکبر کے خلاف سوشل میڈیا پر بدنیتی پر مبنی مہم چلانے کا الزام تھا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>