نقل صرف سندھ میں نہیں ہر جگہ ہوتی ہے: سابق وزير تعليم سندھ سعيد غنی 

امتحانات کے دوران نقل نہ ہو ایسا تو ہو نہیں سکتا،سابق وزير تعليم سندھ سعيد غنی نے بھی  اس بات کا اعتراف کرلیا کہ امتحانات میں نقل ہوتی ہے، اور ایسا ہر جگہ ہوتا ہے، سندھ اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے سعید غنی نے واضح کیا کہ نقل صرف سندھ میں نہیں ہر جگہ ہوتی ہے۔

سابق وزير تعليم  نے اپنا تجربہ بھی شیئر کیا کہ جب میں پڑھتا تھا تو اس وقت بھی نقل ہوتی تھی، سب کے ساتھ ہی ایسا ہوتا ہے،اب کیونکہ موبائل اور دیگر ٹیکنالوجی کا استعمال ہورہاہے تو نقل کے طریقہ کار بھی بدل گئے ہیں،

یہ ایک ایسی چیز ہے کہ جو ہر صوبے میں ہوتی ہے،اور نقل کوئی نئی چیز نہیں ہے ایسا پہلے سے ہوتا آرہاہے اور ہم مکمل طور پر اس کو قابو پانے میں ناکام رہے ہیں،تعليمی بورڈ کے امتحانات ميں چند سينٹرز اچانک تبدیل ہونے کی وجہ سے پرچہ تاخیر سے پہنچا۔

دو ہفتے قبل سندھ میں میٹرک کی طرح انٹرمیڈیٹ کے امتحانات بھی نقل عروج پر رہی، پیپر وقت سے ہی قبل واٹس ایپ گروپوں کے ذریعے طلبہ تک پہنچا اور امتحانی مراکزپر نقل جاری رہی،جس پر شدید تنقید بھی کی جاتی رہی۔

  • نقل چونکہ ہر صوبے میں ہوتی ہے اس لیے سندھ کے وزیر تعلیم سید غنی نے
    نقل کے خلاف کوئی بھی کاروائی کرنے سے انکار کر دیا ہے اور اسے محظ
    وقت کا ضیاء قرار دیا ہے…

  • بھوسڑی والے چاچا
    نقل ہر جگہ ہوتی ہے لیکن جس طرح سندھ میں ہوتی ہے اس مثال دُنیا میں کہیں نہیں ملتی


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >