پنجاب کا نیا بلدیاتی نظام کیسا ہو گا؟کمیٹی نے سفارشات تیار کر لیں

پنجاب کا نیا بلدیاتی نظام کیسا ہو گا؟کمیٹی نے سفارشات تیار کر لیں

نئے بلدیاتی نظام کے متعلق نئی سفارشات تیار، پنجاب میں 11 میٹرو پولٹین اور 25 ضلع کونسل بنانے کی سفارش کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق آئندہ بلدیاتی نظام کے حوالے سے سفارشات وزیراعظم عمران خان کی قائم کردہ کمیٹی نے تیار کی ہیں، سفارشات آئندہ ہفتے میں منظوری کے لئے پیش کی جائیں گی۔

قائم کردہ کمیٹی کی سفارشات کے مطابق نئے بلدیاتی نظام کے تحت پنجاب میں 11 میٹرو پولٹین اور 25 ضلع کونسل ہوں گے، ملک کی جانب سے بین الاقوامی سطح پر کھیلوں کا سامان بنانے اور برآمد کرنے والے شہر سیالکوٹ کو میٹرو پولٹین کا درجہ دینے کی سفرش کی گئی ہے، گجرات کو بھی میٹرو پولٹین کا درجہ دیا جا رہا ہے، 9 ڈویژنل ہیڈ کوارٹرز پر میٹرو پولٹین ہوں گی۔

تیار کردہ سفارشات کے مطابق نئے بلدیاتی نظام میں پنجاب میں 25 ضلع کونسل ہوں گے جبکہ ضلع ناظم اور میٹروپولٹین کے میئر کا انتخاب براہ راست اور جماعتی بنیادوں پر ہوگا۔

مزید بتایا گیا کہ نیبر ہیڈ کونسل، ویلیج کونسل اور تحصیل کونسل کا نظام رائج ہوگا جبکہ نیبر ہیڈ کونسل اور ویلیج کونسل کا انتخاب غیر جماعتی بنیادوں پر ہوگا۔

سفارشات میں کہا گیا ہے کہ ویلیج کونسل کی آبادی 10 سے 20 ہزار مشتمل ہو گی جبکہ نیبر ہیڈ کونسل کی آبادی 15 سے 20 ہزار افراد پر مشتمل ہوگی، ویلیج کونسل کے ساتھ پنچائت کونسل کانظام بھی قائم کیا جائے، گاؤں کی تمام برادریوں کی معتبر شخصیات پنچائت کونسل میں نمائندگی دی جائے گی جبکہ 5 رکنی پنجائت کونسل کے ارکان کی نامزدگی کا اختیار ویلیج کونسل کے چیئرمین کو ہو گا۔

علاقے کی صفائی، اسٹریٹ لائٹس، چوکیداری، اسکول اور چھوٹے تنازعات کے حل کی ذمہ داری اس کونسل کی ہو گی جبکہ کونسل کو معمولی نوعیت کے ٹیکس لگانے کا اختیاربھی ہوگا۔

نیبر ہڈ کونسل اور ویلیج کونسل میں بزرگ شہریوں کے لئے ایک سیٹ مختص کی جائے گی جبکہ لاہورمیٹروپولٹین کارپوریشن میں نیبر ہیڈ کونسل کے بجائے ٹاؤن ہوں گے اور ٹاؤن کے میئرز کا انتخاب بھی براہ راست کیا جائے گا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>