ہم بے قصور ہیں، مینار پاکستان واقعہ میں گرفتار نوجوان پھٹ پڑا

ہم بے قصور ہیں، مینار پاکستان واقعے میں گرفتار نوجوان پھٹ پڑا

14اگست کو لاہور کے گریٹر اقبال پارک میں ٹک ٹاکر خاتون کے ساتھ بدسلوکی کے جرم میں گرفتار ایک نوجوان پھٹ پڑا، کہا کہ ہمیں بے قصور پکڑا گیا ہے۔

خبررساں ادارے کی جانب سے پولیس کی قیدیوں کو لے جانے والی وین میں موجود ایک نوجوان سے گفتگو کی ویڈیو سامنے لائی گئی ہے جس میں نوجوان زاروقطار روتے ہوئے اپنے بے قصور ہونے کا یقین دلانے کی کوشش کررہا ہے۔

واقعے کے وقت مینا ر پاکستان موجودگی سے متعلق سوال پر نوجوان کا کہنا تھا کہ میں موقع پر موجود بھی نہیں تھا بے شک آپ ویڈیو دیکھ لیں اگر میں وہاں موجود ہوا تو مجھے جو چاہے سزادلوادیں۔

ٹک ٹاکر خاتون کی جانب سے شناخت پریڈ میں پہچانے جانے سے متعلق سوال پر جواب دیتے ہوئے نوجوان نےکہا کہ وہ لڑکی جانتی ہےیا خدا جانتا ہے کہ اس نے کس طرح مجھے پہچان لیا، میں نے اس لڑکی سے بھی کہا تھا کہ آپی میں ایسا شخص نہیں ہوں مجھ پر مہربانی کریں لیکن انہوں نے میری ایک نہ سنی۔

صحافی کی جانب سے سوال پر نوجوان نے کہا کہ میں اس دن مینار پاکستان گیا ضرور تھا مگر جس وقت اور جس مقام پر یہ واقعہ ہوا میں اس وقت وہاں موجود نہیں تھا۔

نوجوان نے روتے ہوئے کہا کہ میرے والد کی ٹانگ ٹوٹی ہوئی ہے میں محنت مزدوری کرکے اپنے گھر خرچہ بھیجتا ہوں، مجھے 20 تاریخ کو گھر سے اٹھایا گیا آج 6 تاریخ ہوگئی ہے مگر ہمیں رہائی نہیں دی جارہی۔

واقعے میں گرفتار ایک اور نوجوان نے کہا کہ ہم بے قصور ہیں شناخت پریڈ میں اس لڑکی نے ہمیں غلط شناخت کیا ہے ہمارا جرم یہ ہے کہ ہم 14 اگست کو مینار پاکستان گئے اور پولیس نے ہمیں وہاں موجودگی کی بنیاد پر ہی کیس میں ملوث کردیا۔

یادرہے کہ مینار پاکستان پر ہونے والے خاتون کے ساتھ بدسلوکی اور تشدد کے واقعے کی متاثرہ ٹک ٹاکر عائشہ نے شناخت پریڈکے دوران متعدد نوجوانوں کو پہچان لیا تھا جس کے بعد ان نوجوانوں کو ریمانڈ پر جیل منتقل کردیا گیا تھا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >