وزیر خزانہ شوکت ترین درآمدات کے متعلق غلط تخمینوں پر وزارت تجارت کے حکام پر برہم

وزیرخزانہ شوکت ترین نے درآمدات میں تخمینے سے زائد اضافے پر ایکشن لے لیا،شوکت ترین نے اس حوالے سے اعلیٰ حکام پر برہمی کا اظہار کیا اور بڑھتے ہوئے تجارتی خسارے کا جائزہ لینے کیلیے کیلئے اجلاس بھی بلایا،

دوران اجلاس شوکت ترین نے درآمدات میں وزارت تجارت کی جانب سے لگائے گئے تخمینے سے ایک ارب ڈالر زائد اضافے پر حکام پر شدید غصہ ہوئے اور وزیرخزانہ شوکت ترین نے وزارت تجارت کے حکام سے استفسار کیا کہ صرف دو ہفتے میں ان کے تخمینے ایک ارب ڈالر کے بڑے مارجن کے ساتھ غلط کیوں ہوگئے۔

حکام کے مطابق انھوں نے گزشتہ تین سالوں کی اوسط کی بنیاد پر اندازہ لگایا تھا، اس وضاحت کو وزارت تجارت نے تسلیم کرنے سے انکار کردیا، پاکستان بیورو آف اسٹیٹکس نے گذشتہ ہفتے رپورٹ کیا تھا کہ اگست میں درآمدات 6.5 ارب ڈالر رہیں،جس سے تجارتی خسارہ گذشتہ ماہ میں 144 فیصد بڑھ کر 4.2 ارب ڈالر رہا،

تین ہفتے قبل وزارت تجارت نے اگست میں درآمداتی حجم کا تخمینہ 5.5 ارب ڈالر لگایا لیکن درآمدات بڑھ کر 6.5 ارب ڈالر تک جا پہنچی،جو ایک ماہ میں درآمدات کی بلند ترین سطح ہے،رواں مالی سال میں درآمدات کا حجم 70 ارب ڈالر کے قریب ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>