220 گز کے بدلے صرف 8 گز زمین ملی:بزرگ شہری کی درخواست پر عدالت کا حیرانی کا اظہار

کراچی کے علاقے جیکب لائن کا رہائشی 39 سال سے عدالتوں کے چکر کاٹ رہا ہے۔ 85 سالہ بزرگ کا مقدمہ یہ تھا کہ اس سے 220 گز زمین لیکر اسے 8 گز زمین دی گئی تھی۔ عدالت نے مقدمہ ترجیحی بنیادوں پر سننے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 21 ستمبر تک ملتوی کر دی۔

سندھ ہائیکورٹ کے جسٹس عرفان سعادت خان اور جسٹس محمد فیصل کمال پر مشتمل 2 رکنی بنچ نے 220 گززمین کے بدلے 8 گز زمین دینے کے معاملے پر سماعت کی، درخواست گزار نے کہا کہ مجھے11سال ہو گئے ہیں کیس کیے ہوئے اب تو کم سنائی دیتا ہے، میرا بھی کیس سن لیں۔

عدالت نے استفسار کیا کہ باباجی آپ کا کیس کیا ہے؟ بزرگ شہری نے بتایا کہ 1982 میں میرا گھر لائنز ایریا ری سیٹلمنٹ پراجیکٹ کی نظر ہو گیا تھا۔ مجھ سے 220 گز زمین لیکر مجھے 8 گز کمرشل زمین دے دی گئی ہے۔ عدالت نے فائل کا جائزہ لینے کے بعد حیرانی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ کا وکیل کہاں ہے؟

بزرگ شہری نے کہا اب وکیل نہیں آتا میں خود ہی کھڑا ہوں، جسٹس عرفان سعادت نے ریمارکس دیئے کہ عدالت آپ کا مقدمہ ترجیحی بنیادوں پر سنے گی۔ عدالت نے فریقین سے جواب طلب کرتے ہوئے سرکاری وکیل کو خصوصی توجہ دینے کا حکم دے دیا۔ اس کے علاوہ ڈی جی کے ڈی اے سے وضاحت طلب کرتے ہوئے پراجیکٹ ڈائریکٹر لائنز ایریا ری سیٹلمنٹ ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کو بھی جواب جمع کرانے کا حکم دیا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>