عدالت نے مریم نواز کی 1 ماہ کی مہلت کی استدعا مسترد کر دی

مریم نواز اور کیپٹن صفدر کے وکیل امجد پرویز نے کیس کی پیروی معذرت کرلی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ میں ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت ہوئی، سزا کے خلاف اپیلوں کی سماعت کیلئےمریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر اسلام آباد ہائی کورٹ میں پیش ہوئے جبکہ مریم نواز کے وکیل امجد پرویز ایڈوؤکیٹ ایک بار پھر پیش نہ ہوئے۔

مریم نواز نے عدالت کے سامنے موقف اپنایا کہ میرے وکیل امجد پرویز نے بیماری کے باعث مزید پیروی سے معذرت کرلی، امجد وکیل کی کمر میں درد ہے، نیا وکیل کرنے کے لیے ایک ماہ کو وقت درکار ہے۔

مریم نواز نے مزید کہا کہ میں ایک اور پٹیشن فائل کرنا چاہتی ہوں، میری اپیل سننے سے پہلے میرٹ کی بجائے اس پٹیشن کو سنا جائے۔ایون فیلڈ ریفرنس کے میرٹ پردلائل سے قبل کچھ حقائق عدالت کے سامنے رکھنا چاہتی ہوں۔

اس پر عدالت نے مریم نواز کی ایک ماہ کی مہلت کی درخواست رد کردی اور جسٹس عمر فاروق نے کہا کہ ایک ماہ نہیں، ایک ہفتے کا وقت دیتا ہوں۔

عدالت کا یہ بھی کہنا تھا کہ آپ کا حق ہے ، آپ جسے بھی نیا وکیل کریں، جب تک امجد پرویز ایڈووکیٹ خود درخواست واپس نہیں لیتے، وہ ہمارے وکیل ہیں۔

اسلا م آباد ہائیکورٹ نے مریم نواز کو نیا وکیل کرنے کے لیے 23 ستمبر تک وقت دے دیا۔

دوسری جانب مریم نواز نے عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کو افغانستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت نہیں کرنی چاہئے اور اپنی مرضی کے فیصلے افغان عوام پر مسلط نہیں کرنے چاہئیں،شہبازشریف کو پارٹی وزیراعظم کیلئے نامزد کرتی ہے تو ہم سپورٹ کریں گے۔

مریم نواز کا مزید کہنا تھا کہ پی ٹی آئی حکومت عوام کو ڈلیور کرنے میں ناکام ہو گئی، ملک میں تبدیلی ضرور آئے گی، جھوٹی اور جعلی تبدیلی سے عوام کی جان چھوٹے گی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >