سانحہ مہران ٹاؤن: فیکٹری مالکان، محکمہ لیبر اور ایس بی سی اے ذمہ دار قرار

سانحہ مہران ٹاؤن: فیکٹری مالکان، محکمہ لیبر اور ایس بی سی اے ذمہ دار قرار

کراچی کی سیشن کورٹ نے سانحہ مہران ٹاؤن کیس میں فیکٹری مالکان سمیت محکمہ لیبر اور ایس بی سی اے کو ذمہ دار قرار دیتے ہوئے تحریری فیصلہ جاری کردیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق کراچی کی سیشن کورٹ میں ملزمان کی درخواست ضمانت پر تحریری فیصلہ جاری کردیا گیا ہے جس میں عدالت نے فیکٹری کے مالک سمیت تمام متعلقہ محکموں کو بھی ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کارروائی کا حکم دیدیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق عدالت نے اپنے تحریری فیصلے میں لکھا ہے کہ صرف فیکٹری مالکان کے خلاف کارروائی اور متعلقہ اداروں کو شامل نہ کرنا مرنے والوں کے ساتھ زیادتی ہوگی۔

عدالت نے کہا کہ آتشزدگی کا شکار ہونے والی فیکٹری رہائشی پلاٹ پر تعمیر کی گئی جس کی متعلقہ اداروں سے اجازت بھی نہیں لی گئی تھی، محکمہ لیبر نے کبھی اس فیکٹری کا کوئی وزٹ نہیں کیا، فیکٹری میں آگ پرقابو پانے کی کوئی سہولت موجود نہیں تھی، فیکٹری کا دروازہ بھی بند تھا جس کے باعث 16 مزدوروں کی موت ہوگئی، دروازہ بند ہونا غیر معمولی وجہ ہے۔

عدالت نے اپنے تحریری فیصلے میں تمام متعلقہ محکوں کو حادثے کا ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ فائر بریگیڈ کاعملہ واقعے کے بعد تاخیر سے پہنچا سول ڈیفنس کا عملہ غیر تربیت یافتہ تھا۔

دوسری جانب جوڈیشل مجسٹریٹ شرقی نے فیکٹری مالکان ، بلڈنگ مالک اور فیکٹری منیجر کو جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے انہیں تین روز کیلئے پولیس کے حوالے کردیا ہے۔

یادرہے کہ کراچی کے علاقے کورنگی مہران ٹاؤن میں کیمیکل فیکٹری میں آتشزدگی سے 17 مزدوروں کی ہلاکت ہوئی جس کے بعد 28 اگست کو سرکار کی مدعیت میں کورنگی انڈسٹریل ایریا کے پولیس اسٹیشن میں مقدمہ درج کیا گیا تھا، مقدمے کے مطابق فیکٹری میں ہنگامی طور پر باہر نکلنے کیلئے کوئی راستہ نہیں بنایا گیا ، بالائی منزل پر جانے کیلئے ایک ہی راستہ تھا جس پر تالا لگایا گیا تھا، فیکٹری میں فائر الارم یا آگ بھجانے والے آلات کی سہولیات بھی موجود نہیں تھیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>