حکومت سے روٹی کی قیمت کنٹرول نہیں ہوتی: پشاور ہائیکورٹ بڑھتی مہنگائی پر برہم

سندھ ہو یا پنجاب یا پھر بلوچستان اور خیرپختونخوا ملک بھر میں مہنگائی کا سلسلہ تھمنے کے بجائے بڑھ رہا ہے،جس پر پشاور ہائیکورٹ نے برہمی کا اظہار کیا ہے،پشاور ہائیکورٹ میں پولٹری اور لائیو اسٹاک قیمتوں میں اضافہ کے خلاف دائر درخواست پر سماعت کی،کیس کی سماعت چیف جسٹس قیصر رشید خان کی سربراہی میں قائم بنچ نے کی،پولٹری ایسوسی ایشن کے صدر، اے اے جی سکندرحیات شاہ اور درخواست گزار وکلاءبھی عدالت میں پیش ہوئے۔

چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ جسٹس قیصررشید خان نے ریمارکس دیئے کہ حکومت سے ایک روٹی کی قیمت کنٹرول نہیں ہوتی، مہنگائی کی وجہ سے عوام انتہائی تکلیف میں ہے،300 روپے فی کلو گوشت ملتا تھا اب 600کا ہوگیا،حکومت کیاکر رہی ہے؟

چیف جسٹس قیصر رشید نے مزید ریمارکس دیئے کہ پولٹری، لائیو اسٹاک اور دیگر اشیاءکی قیمتوں میں روز بروز اضافے کی خبریں سامنے آتی ہیں،مہنگائی کی وجہ سے عوام کی مشکلات مزید بڑھ گئی ہیں۔

جسٹس سید محمد عتیق شاہ نے سیکریٹری فوڈ سے گوشت کی قیمت سے متعلق استفسار کیا، جس پر سیکریٹری فود نے بتایا کہ مارکیٹ میں 600روپے فی کلو گوشت مل رہا ہے،چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ 300سے 350 روپے فی کلو گوشت ملتا تھا اب 600 کا ہوگیا ہے، حکومت کیاکر رہی ہے؟

چیف جسٹس نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت سے ایک روٹی کی قیمت کنٹرول نہیں ہوتی، مہنگائی نے عوام کی زندگی مشکل بنادی ہے،عوام کو ریلیف دینے کےلئے اقدامات کئے جائیں، عدالت نے تمام اسٹیک ہولڈ سے مل بیٹھ کر قیمتوں کا تعین کرنے کیلئے ایک ہفتے کی مہلت دے دی، تفصیلی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے کیس سماعت ملتوی کردی۔

  • Khan sahab aap ke sab se bari opposition aap ke governance hai, mihngai aap ko aainda election mein le doobay ge.
    aap ko to mihngai k khilaaf jangi buniyaado per kaam karna chahiay tha, but aap ko shayed iss ke fikar he nahi. yaad rakhiay ga roz marra k khurdo nosh ka taluk daily basis per hota hai, aur jis insan ke pohanch se ziada cheazein bik rahi ho phir wo insan bud-dua b deta hai, gaali b deta, bud-zun b hota hai. aap chahey darjano dosrey ache project start ker lein, but gareeb middle class tabqay ke bardaasht ab khatam ho gai hai, aur iss ka badla wo election day per le ge..
    baat PML N walo ke b theak hai, agar wo itney barey corrupt thay, qarza b le rahe thay to unho ne kaafi projects b lagaey, aur mihngai ko b control keeya,,
    aap ne un se ziada qarza b lia, koi barey projects b nahi, aur uss k bawajood mihngai hai k tuhamne ka naam he nahi le rahi.
    yaad rakhiay ga hum aap k mukhlis supporters hein, aap agar next eelctions mein harein gay to hamein afsos ho ga.
    aik insan jantey bhoojtey b powers honay k bawajood b 5 saal govt mein rehne k baad b mihngai ko contrrol na ker saka..


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >