ایم اے او کالج لاہور،طالبہ کا لیکچرار پر ہراساں کرنے کا الزام، فون پر نازیبا پیغامات بھیجے

محمڈن اینگلو اوریئنٹل کالج لاہور کے شعبہ نفسیات کی طالبہ نے لیکچرار پر الزام لگایا کہ اسے لیکچرار کی جانب سے ہراساں کیا گیا ہے۔ طالبہ نے اسٹنٹ ڈائریکٹر کالجز اور کالج انتظامیہ کو بھی تحریری شکایت جمع کرا دی جس میں کہا ہے کہ اسے اور دیگر طالبات کو لیکچرار کی جانب سے ہراساں کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق طالبہ کی جانب سے جمع کرائی گئی تحریری درخواست میں مؤقف اپنایا گیا ہے کہ لیکچرار نے کہا کہ اگر نمبر لگوانے ہیں تو باہر ملاقات کرو۔ اس کے علاوہ طالبہ نےکہا کہ اسے فون پر نازیبا پیغامات بھیجے گئے ہیں جس پر اس کے موبائل ڈیٹا کو بھی انکوائری کا حصہ بنا دیا گیا ہے۔

ایم اے او کالج کے پرنسپل کا کہنا ہے کہ طالبہ کی شکایت پر پروفیسر کی سربراہی میں 5 رکنی انکوائری کمیٹی قائم کی گئی تھی جس نے انکوائری کی، اس کی روشنی میں بننے والی رپورٹ ہائیر ایجوکیشن کو بھیج دی گئی ہے۔ ہم نے شفارش کی ہے کہ اس لیکچرار کا تبادلہ کسی مردانہ کالج میں کیا جائے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل بھی ایم اے او کالج لاہور میں ایک انگریزی کے لیکچرار پر جنسی ہراسگی کا الزام لگا تھا جسے انکوائری میں بے گناہ قرار دیا گیا تھا۔ مگر پھر بھی پرنسپل نے اسے کلین چٹ دینے کیلئے لیٹر جاری نہیں کیا تھا۔ تاہم الزامات کے بعد اس نے خود کشی کر لی تھی۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>