حکومت نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ملازمت میں توسیع پر نظرثانی درخواست دائر کر دی

حکومت کی آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ملازمت میں توسیع پر نظر ثانی درخواست

پی ٹی آئی حکومت نے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ملازمت میں توسیع سے متعلق سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف نظرثانی کی درخواست دائر کردی۔

درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ فیصلے میں اہم آئینی و قانونی نکات کا جائزہ نہیں لیا گیا، عدالت نے ججز توسیع کیس کے فیصلوں کو بھی مدنظر نہیں رکھا۔ جب ماضی میں ایڈیشنل اور ایڈہاک ججز کو سپریم کورٹ ماضی میں توسیع دیتی رہی ہے

ذرائع کے مطابق درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ سپریم کورٹ کا لارجر بینچ بنایا جائے اور ان کیمرہ سماعت کی جائے

اس سے قبل وزیر قانون و انصاف فروغ نسیم نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ عدالت عظمیٰ کے فیصلے میں آئین میں بیان کردہ کچھ نکات پر غور نہیں کیا۔

وزیر اعظم عمران خان نے خطے کی صورتحال کا حوالہ دیتے ہوئے اگست میں جنرل قمر جاوید باجوہ کو تین سال کی توسیع دی تھی

فیصلہ

سپریم کورٹ نے 28 نومبر کو اپنے فیصلے میں عمران خان کی زیرقیادت حکومت کو 6 ماہ کی مہلت دی کہ وہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے حوالے سے قانون سازی کر سکیں

اس وقت کے چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا تھا کہ ، "ہم عدالتی تحمل کا مظاہرہ کر رہے ہیں حالانکہ قانون میں توسیع دینے کی اجازت نہیں ہے۔”


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>