ماڈل پولیس اسٹیشن میں عام شہری کو کیا سہولیات میسر ہوں گی؟

تحریک انصاف کی حکومت نے پولیس کلچر میں تبدیلی کا نعرہ لگایا جس پر وزیراعظم عمران خان بارہا زور دیتے رہے کہ جب وہ حکومت میں آئے تو پولیس کلچر کو تبدیل کرکے شہریوں کیلئے دوستانہ ماحول پیدا کریں گے تاکہ مظالم کا شکار شہریوں کو اپنی شکایات کے اندراج کیلئے کسی قسم کے خوف وہراس کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

 اس خواب کو عملی جامہ پہنانے کیلئے وزیراعظم عمران خان نے آج 29 ماڈل پولیس اسٹیشنز کا افتتاح کیا ہے ،اس موقع پر وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار اور آئی جی پنجاب بھی ان کے ہمراہ تھے ،آئی جی پنجاب نے وزیراعظم عمران خان کو اس موقع پر بریفنگ دی ۔ آئیے ایک نظر ڈالتے ہیں کہ یہ ماڈل پولیس اسٹیشنز کام کیسے کریں گے ، روایتی تھانوں سے انکا کلچر کس طرح مختلف ہوگا اور یہاں شہریوں کو کیا کیا سہولیات میسر ہونگی ۔

50 پولیس سٹیشنز کو "سمارٹ پولیسنگ سسٹم” کے مطابق تیار کرنے کا عمل شروع ہے جن میں سے
29 کا آج وزیراعظم عمران خان نے افتتاح کیا

 

 شہریوں کو جائز کام کیلئے پولیس اسٹیشن میں کسی بھی پریشانی سے بچانے کیلئے یہ سٹیشنز دورِ حاضر کے تقاضوں سے ہم  آہنگ بنائے گئے ہیں۔


وی آئی پی کلچر کے خاتمے اور تمام شہریوں سے یکساں  سلوک کے لیے تھانے میں کیومیٹک مشین کی تنصیب کی گئی ہےتاکہ آنے والے ہر شہری کو اپنی باری پر خدمات کی فراہمی یقینی بنائی جا سکے

 

ڈیوٹی آفیسر کے دفتر سے ملحقہ آرام دہ بنیادی ضروریات سے مزین ویٹنگ رومز بنائے گئے ہیں جن میں کسی قسم کی مزید رہنمائی کے لیے تعلیم یافتہ افسران کی بطور معاون تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے۔

بچوں اور خواتین کی سہولت کیلئے الگ سے وکٹم سپورٹ آفس بنائے گئے ہیں جن میں لیڈی کانسٹیبلز تعینات کی گئی ہیں۔

 شہریوں کے تنازعات کے حل کے لیے تھانہ میں ڈی آر سی اور کمیونٹی روم کا قیام  عمل میں لایا گیا ہے تاکہ شہریوں کے تنازعات معززین علاقہ مصالحت سے حل کرا سکیں

 حوالات میں تمام انسانی ضروریات کے سامان کے علاوہ ایک منی لائبریری اور جدید انوسٹیگیشن روم کا قیام جہاں ملزمان سے ہونے والی تفتیش سینئر افسران بزریعہ تکنیکی آلات مانیٹر کریں گے

•تھانہ میں مانیٹرنگ روم کا قیام جس سے شہر بھر کی سی سی ٹی کیمروں کے ذریعے نگرانی کی جائے گی ۔

اسکے علاوہ پولیس ملازمین کیلئے بہترین رہائش، میس کی سہولیات بھی میسر ہیں تاکہ وہ اپنی پروفیشنل ذمہ داریاں احسن طریقے سے نبھا سکیں۔

 


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>