امریکا اور طالبان میں افغانستان امن معاہدے پر دستخط ہو گئے

افغانستان میں جاری 19 سالہ طویل جنگ بندی کے خاتمے کے لیے امریکہ اور طالبان کے درمیان امن معاہدے پر دستخط ہوگئے۔

 

خبر رساں ادارے کے مطابق قطر کے دارالحکومت دوحہ میں منعقد ہونے والی تقریب افغان طالبان کی جانب سے ملا عبدالغنی برادر اور امریکا کی جانب سے نمائندہ خصوصی برائے افغان مفاہمتی عمل زلمے خلیل زاد نے امن معاہدے پر دستخط کیے۔ معاہدے پر دستخط کے بعد امریکا افغانستان سے امریکی اور نیٹو افواج کا انخلا آئندہ 14 ماہ کے دوران مکمل کرے گا۔

امریکہ اور طالبان کے درمیان ہونے والے امن معاہدے کے تحت امریکہ اور طالبان کی جانب سے مشترکہ اعلامیہ جاری کیا گیا ہے جس کے مطابق امریکا افغانستان سے امریکی افواج کا 14 ماہ میں انخلاء مکمل کرے گا اور یہ انخلاء طالبان کی جانب سے امن معاہدےکی پاسداری سےمشروط کیا گیا ہے۔

 

امریکا اور طالبان میں افغانستان امن معاہدے پر دستخط ہو گئے

امریکا اور طالبان میں افغانستان امن معاہدے پر دستخط ہو گئے

امریکا اور طالبان میں افغانستان امن معاہدے پر دستخط ہو گئے

امریکہ اور طالبان کے درمیان امن معاہدے پر دستخط کے بعد اگلا مرحلہ افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات کا ہونا ہے جنہیں بین الافغان مذاکرات بھی کہا جاتا ہے۔

واضح رہے کہ نائن الیون کے واقعے کے چند ہفتے بعد امریکا نے ستمبر 2001 میں افغانستان پر حملہ کردیا تھا اور اب تک اس جنگ میں 24 ہزار سے زائد امریکی فوجی مارے جاچکے ہیں جنکہ اس جنگ میں ہزاروں طالبان جنگجو بھی مارے جا چکے ہیں۔ جبکہ دوسری جانب اب بھی 12 ہزار سے زائد امریکی فوجی افغانستان میں موجود ہیں۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکا کا تخت سنبھالنے کے بعد افغان جنگ ختم کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ جو کہ دوحہ میں پایہ تکمیل تک جا پہنچا ہے۔

قطر کے دارالحکومت دوحہ کے مقامی ہوٹل میں ہونے والی تقریب میں پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سمیت 50 ملکوں کے نمائندے بھی امن معاہدے کی تقریب میں شریک ہوئے۔

قطر کے دارالحکومت دوحہ میں امن معاہدے سے نہ صرف امریکا اور طالبان کے درمیان 19 سالہ جنگ کا خاتمہ ہوگیا۔ جس سے پاکستان سمیت خطے میں پائیدار امن کی راہ بھی ہموار ہوگئی ہے۔ جبکہ امریکا اور طالبان کے درمیان 2018 سے جاری مذاکرات کے کئی کامیاب اور ناکام ادوار ہو چکے ہیں۔ جو دونوں اطراف سے کسی نہ کسی مسئلے کی وجہ سے طول پکڑتے رہے۔ جبکہ معاہدے پر دستخط ہونا سہولت کار پاکستان کے بیانیے کی فتح ہے جس میں پاکستان کہہ چکا ہے کہ افغان مسئلے کا کوئی فوجی حل نہیں بکلہ امن کا راستہ ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >