اسلام آباد ہائی کورٹ میں بھارتی جاسوسوں سے متعلق درخواست کی سماعت

اسلام آباد ہائی کورٹ میں بھارتی ہائی کمیشن کی جانب سے دائر درخواست پر سماعت ہوئی جس میں بھارتی ہائی کمیشن نے عدالتی دائرہ اختیار کو چیلنج کردیا ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ کی سربراہی میں لارجر بینچ کے کیس کی سماعت کی، دوران سماعت بھارتی ہائی کمیشن نے موقف اختیار کیا کہ ہماری درخواست پر چار قیدی رہا ہوچکے ہیں، اب یہ درخواست غیر موثر ہوچکی ہے۔

جس پر عدالت کا کہنا تھا کہ ہم اپنے دائرہ اختیار سے باہر نہیں جارہے بلکہ عالمی عدالت انصاف کے فیصلے پر عمل درآمد کروانا چاہتے ہیں، عدالت نے وزارت خارجہ کو بھارتی حکومت سے رابطہ کرنے اور ایڈیشنل اٹارنی جنرل کو وزارت خارجہ کے ساتھ مل کر بھارت کے ساتھ اس معاملے کو کلیئر کرنے کا حکم دیدیا۔

عدالت نے مزید کہا کہ اگر بھارت عالمی عدالت انصاف کے فیصلے پر عمل درآمد نہیں چاہتی تو واضح کرے، بھارت کی متفرق درخواست سے لگ رہا ہےکہ عدالتی کارروائی کو سمجھا نہیں گیا، عدالت نے کیس کو کلبھوشن کیس کے ساتھ سماعت کیلئے مقرر کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 5 مئی تک ملتوی کردی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >