مسلح جتھوں کو ملک کا امن خراب کرنے کی اجازت نہیں دے سکتے، وزیراعظم عمران خان

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مسلح جتھوں کو ملک کا امن خراب کرنے کی اجازت نہیں دے سکتے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت حکومتی رہنماؤں اور وزراء کا اجلاس ہوا جس میں ملک کی سیکیورٹی اور مذہبی جماعت کے احتجاج کے بعد کی صورتحال پر غور کیا گیا۔ اجلاس میں حکومتی رہنماؤں کو تحریک لبیک پر پابندی کے فیصلہ پر اعتماد میں لیا گیا۔

اجلاس میں وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید، وزیر مذہبی امور نورالحق قادری اور وفاقی وزیر فواد چوہدری شریک ہوئے۔

وزیراعظم نے پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی قربانیوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ پولیس اور سیکیورٹی اداروں نے جس جذبہ سے امن قائم کیا قابل تحسین ہے۔

عمران خان نے مزید کہا کہ مطالبات کرنا ہر کسی کا حق ہے مگر پرتشدد احتجاج کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔

دوسری جانب اسلام آباد میں وزیر برائے مذہبی امور نورالحق قادری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایک ڈرافٹ حکومت کا تھا اور ایک ٹی ایل پی کا۔ ہم نے کوشش کی تھی کہ معاملات کے حل کے لئے قرارداد کا بہتر مسودہ لائیں جس سے ہم پر سفارتی سطح پر کوئی اثر نہ پڑے۔ ہم نے مذاکرات کی بھرپور کوشش کی۔

واضح رہے کہ وفاقی کابینہ نے تحریک لبیک پاکستان پر پابندی کی منظوری دے دی۔ َی ایل پی پر پابندی کی منظوری سرکولیشن سمری کے ذریعے لی گئی جبکہ پابندی انسداد دہشت گردی ایکٹ 1997 کے تحت لگائی گئی۔

وزارت داخلہ نے گزشتہ روز مذہبی جماعت تحریک لبیک پاکستان پر پابندی عائد کرنے کیلئے سمری تیار کی تھی، سمری کامسودہ وزیراعظم عمران خان کو بھیجا گیا تھا جو انہوں نے منظور کر لیا تھا۔

  • یہ گھٹیا لوگ بچے کو روٹی چوری کرنے پر مار دیتے ہیں
    اور ملک کی پراپرٹی باپ کا مال سمجھ کے جلاتے ہیں
    ہماری قوم کو جاگنا ہو گا اور اپنی ملک کو اپنی چیز سمجھ کر خیال رکھنا چاہیے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >