سابق وزیر اعظم نواز شریف کی جائیداد نیلامی کی راہ ہموار ، اسلام آباد ہائی کورٹ نے فیصلہ سنا دیا

سابق وزیر اعظم نواز شریف کی جائیداد نیلامی کی راہ ہموار ، اسلام آباد ہائی کورٹ نے فیصلہ سنا دیا

اسلام آباد ہائی کورٹ نے توشہ خانہ ریفرنس میں تین درخواست گزاروں کی نواز شریف کی جائیداد نیلامی رکوانے کی درخواستیں ناقابل سماعت قرار دے کر خارج کردیں ، عدالت نے فیصلے میں کہا پٹشنر ثابت کرنے میں ناکام رہے کہ نواز شریف کی نیلامی کی جانے والی جائیداد میں ان کا مفاد متاثر ہورہا ہے

چیف جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس عامر فاروق نے تین درخواست گزاروں اسلم عزیز ، اقبال برکت اور ارشد ملک کی درخواستوں پر سماعت کا فیصلہ جاری کردیا نواز شریف کی جائیداد نیلامی رکوانے سے متعلق درخواستوں پر فیصلے پر عدالت نے کہا 9 جون کے احتساب عدالت کے فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کیا گیا ،نواز شریف کے اشتہاری ہونے کی وجہ سے ان جائیداد احتساب عدالت نے 22 اپریل کو احتساب عدالت نے نواز شریف کی جائیداد نیلام کرنے کا حکم دیا

عدالت نے فیصلے میں کہا پٹشنرز شہریوں کے وکیل کے بقول نواز شریف کی جائیدادیں انہوں نے خریدی ہوئی ہیں لیکن احتساب عدالت نے درخواست خارج کردی،نوازشریف کی جائیدادیں فروخت کرنے کے ایگریمنٹ پر عمل نہیں ہوا جس نے عمل کرایا اس کے پاس اختیار نہیں تھا،عدالت نے کہا پٹشنر ثابت کرنے میں ناکام رہے کہ نواز شریف کی نیلامی کی جانے والی جائیداد میں ان کا مفاد متاثر ہو رہا ہے

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے دوران سماعت ریمارکس دیے درخواست گزاروں کا اس پراپرٹی میں کیا انٹرسٹ ہے؟ درخواست گزار اراضی کو اپنی پراپرٹی سمجھ رہے ہیں مگر کوئی ثبوت پیش نہیں کیا گیا، آپ کے پاس پاور آف اٹارنی نہیں، جو معاہدہ ہوا ہے اس پر دستخط بھی نہیں


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>