سی ڈی اے کوخواتین اراکین اسمبلی کیلئے پارلیمنٹ لاجز میں بیوٹی پارلر قائم کرنے کا حکم

سجنا سنورنا ہر عورت کا حق ہے پھر چاہے و ہ سیاستدان ہی کیوں نا ہوں، جی ہاں خواتین اراکین اسمبلی نے مطالبہ کیا ہے کہ پارلیمنٹ لاجز میں بیوٹی پارلر قائم کیا جائے۔


سینیٹ کی ہاؤس کمیٹی نے کیپیٹل ڈیولپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) کو حکم جاری کیا ہے کہ جلد از جلد پارلیمنٹ لاجز میں خواتین کیلئے بیوٹی پارلر قائم کیا جائے۔
ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا کی سربراہی میں کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں سینیٹر کلثوم پروین اور ثمینہ سعید کو سیلون کیلئے جگہ متعین کرنے کی ذمہ داری دی گئی، اور سی ڈی اے کو ہدایات جاری کی گئیں کہ جلد از جلد ان دونوں سینیٹرز سے ملاقات کرکے معاملے کو ختم کیا جائے ۔
مختلف سینیٹرز کی جانب سے پارلیمنٹ لاجز میں رہائش کی شکایات سے متعلق ڈپٹی چیئرمین نے سی ڈی اے کو سینیٹرز کی شکایات ترجیحی بنیادوں پر دور کرنے کا حکم دیتے ہوئے سی ڈی اے  کو لاجز کی مرمت سے متعلق بجٹ بنانے کے حکم سے متعلق یاد دہانی بھی کروائی۔
جس پر کمیٹی کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ پارلیمنٹ لاجز کی تزیئن و آرائش اور مرمت کیلئے 319 ملین کی رقم مختص کی گئی تھی جس میں سے 203 ملین خرچ ہوچکے ہیں۔
سینیٹر ثمینہ سعید نے پارلیمنٹ میں پانی کی ترسیل سے متعلق شکایت کرتے ہوئے کہا کہ پارلیمنٹ میں سپلائی کیا جانے والا پانی سب سٹینڈرڈ ہے، انہوں نے کمیٹی سربراہ سے درخواست کی کہ سی ڈی اے کو پیوریفائڈ واٹر کی ترسیل یقینی بنانے کی ہدایات جاری کی جائیں اور ساتھ ساتھ انہوں نے درخواست کی کہ بجلی کے بلز آخری تاریخ سے کم از کم 7 دن پہلے فراہم کیے جائیں۔


  • 24 گھنٹوں کے دوران 🔥

    View More

    From Our Blogs in last 24 hours 🔥

    View More

    This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

    >