لاک ڈاؤن: کیا سندھ حکومت کے قدم پیچھے ہٹنا شروع ہوگئے؟

افراتفری کے آغاز کے خدشات… سندھ حکومت نے قدم پیچھے ہٹانا شروع کردیا بلاول کی امیج بلڈنگ کرنے والے اینکرز کو حزیمت کا سامنا.. معاملہ شہبازشریف اور بلاول کی عوام سے محبت کا…. سنیئے تفصیلات

صدیق جان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کی مختلف میٹنگز پہلے سے طے شدہ تھیں۔ وزیراعظم عمران خان پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں شریک ہوئے۔ انہوں نے اپنی بات کی اور اٹھ کر چلے گئے جس پر شہبا زشریف اور بلاول سیخ پا ہوگئے اور واک آؤٹ کرگئے۔

صدیق جان نے مزید کہا کہ وزیراعظم عمران خان کے لاک ڈاؤن سے متعلق خدشات درست ہورہے ہیں۔و زیراعظم نے پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں کہا کہ وہ مکمل لاک ڈاؤن کے حق میں نہیں کیونکہ اس سے ٹرانسپورٹیشن بند ہوجائے گی اور سپلائی چین رک جائے گی۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ وہ جزوی لاک ڈاؤن کے حق میں ہیں جو اس وقت ہے۔

صدیق جان کے مطابق وزیراعظم نے کہا کہ خیبرپختونخوا اور پنجاب نے لاک ڈاؤن سے متعلق کہا کہ انہوں نے جواب دیا کہ اٹھارہویں ترمیم کے تحت انکے پاس اختیار ہے۔ اگر وہ کرنا چاہیں تو کرلیں۔

صدیق جان نے کہا کہ سندھ حکومت آہستہ آہستہ اپنے فیصلے سے ہٹ رہی ہے۔ اس نے نئے نوٹیفکیشن کے مطابق چکن اور انڈے کی سپلائی کی اجازت دیدی اور منافقت یہ کی کہ اخبارات کو بھی اجازت دیدی جس کی وجہ صرف اخبارات اور میڈیا مالکان کو خوش کرنا ہے۔غریب کا کھانا بند کردو لیکن اخبار جانا چاہئے کیونکہ وہ اشرافیہ کا ہے۔

صدیق جان نے مزید کہا کہ سندھ پولیس پیسے لیکر لوگوں کو جانے دے رہی ہے۔ بلاول کے لئے امیج بلڈنگ کی گئی جن صحافیوں نے امیج بلڈنگ کی ، اب انہیں ہزیمت کا سامنا کرنا پڑرہا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

>