شہزاداکبر بمقابلہ شاہد خاقان عباسی، شاہد خاقان عباسی کے یوٹرن

شہزاداکبر نے شاہد خاقان عباسی کی دکھتی رگ پر ہاتھ رکھ دیا۔۔۔ شاہد خاقان عباسی کا شہزاداکبر کو پہچاننے سے انکار۔۔ بیرسٹر شہزاداکبر نے جو پیشنگوئی کی شاہد خاقان عباسی نے ویسا ہی جواب دیا۔

شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ شاہد خاقان عباسی اس چیز کو جھٹلا دیں کہ جب وہ وزیراعظم تھے ، کیا سلمان شہباز فائلیں لیکر انکے پاس نہیں آتے تھے اور مختلف مراعات لیکر نہیں جاتے تھے؟

جس کے بعد شاہد خاقان عباسی نے غریدہ فاروقی کے شو میں شرکت کی۔ شہزاد اکبر کے الزام کا جواب دیتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ میں سلمان شہباز کو پوری زندگی میں شاید تین دفعہ ملا ہوں۔ مجھ سے سلمان شہباز نہ ایسی فائلیں لیکر آئے، نہ میں ایسی فائلیں دیکھتا ہوں، نہ وزیراعظم کا اختیار ہوتا ہے کہ فائلوں پر ایسے فیصلے کرتے ہیں، یہ فیصلے ای سی سی کرتی ہے اور وزیراعظم انہیں اون کرتا ہے۔

اس سے قبل ہی شہزااکبر نے پیشنگوئی کی تھی کہ شاہد خاقان عباسی کا جواب یہ ہونا ہے کہ یہ وزیراعظم فیصلہ نہیں کرتا، یہ ای سی سی فیصلہ کرتی ہے۔ ایک طرف تو یہ کہتے ہیں کہ وزیراعظم عمران خان سے پوچھ لیں لیکن اپنے اوپر بات آتی ہے تو کہیں گے کہ ای سی سی سے پوچھ لیں اور شہزاد اکبر کی پیشنگوئی درست نکلی۔

اس پیشنگوئی پر شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ یہ صاحب کون ہیں، کہاں سے آئے ہیں، میں انہیں نہیں جانتا۔ جس پر غریدہ فاروقی نے کہا کہ آپ انہیں جانتے ہیں، یہ اکثر پریس کانفرنسیں کرتے ہیں ۔ جس پر شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ میں نے انکی کوئی پریس کانفرنس نہیں دیکھی۔

شاہد خاقان عباسی کا مزید کہنا تھا کہ اگر کوئی وزیر بات کرنا چاہتا ہے تو اسمبلی میں آکر بات کرے، یہ شخص اسمبلی آسکتا ہے؟

ایک طرف تو شاہد خاقان عباسی کہتے ہیں کہ میں شہزا داکبر کو نہیں جانتا لیکن اپنی پریس کانفرنس میں شہزاد اکبر کو جواب دیتے نظر آتے ہیں جس کا مطلب ہے کہ بیرسٹر شہزااکبر کو اچھی طرح جانتے ہیں۔

اس پر شہبازگل نے ٹویٹ کیا اور شاہد خاقان عباسی پر طنز کرتے کہا کہ کون لوگ او تسی

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More