"ترس آتا ہے ان لوگوں پرجواب بھی انکو لیڈرمانتے ہیں” نواز شریف کی تصویر پر حکومتی رہنماؤں کا ردعمل

لندن: سابق وزیراعظم نواز شریف کی ہوٹل میں چائے پیتے ہوئے ایک اور تصویر سوشل میڈیا پر وائرل

"ترس آتا ہے ان لوگوں پرجواب بھی انکو لیڈرمانتے ہیں" نواز شریف کی تصویر پر حکومتی ردعمل

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف جو اس وقت علاج کی غرض سے لندن میں مقیم ہیں کی آئے روز لندن کے مختلف ہوٹلز میں کھانا کھاتے اور چائے پینے کی تصاویر سوشل میڈیا پر تبصروں اور خبروں کی زینت بنی رہتی ہیں، اسی تناظر میں سابق وزیراعظم نواز شریف کی لندن کے ایک ہوٹل میں چائے پینے کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے، جس میں انہیں اہل خانہ کے ساتھ چائے پیتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

عدالت سے علاج کی غرض سے ضمانت پر لندن جانے والے سابق وزیراعظم نواز شریف کی ان کے اہل خانہ کے ساتھ لندن میں سڑک کنارے ایک ہوٹل میں چائے پینے کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے جس میں نواز شریف کو اپنے اہل خانہ کے ساتھ چائے پیتے ہوئے واضح طور پر دیکھا جاسکتا ہے۔

سوشل میڈیا پر مسلم لیگ ن کے قائد اور سابق وزیراعظم پاکستان نواز شریف کی اپنے اہل خانہ کے ساتھ چائے پینے کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد وزیراعظم عمران خان کے ترجمان شہباز گل نے نوازشریف کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اپنے آفیشل ٹوئٹر ہینڈل پر ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا کہ ” ‏انہوں نے قوم کو بے وقوف سمجھ رکھا ہے۔آپ جھوٹ بول کر لندن گئے۔جس جماعت کا میعار یہ ہو کہ تین دفعہ وزیراعظم بننے والے شخص میں اتنی اخلاقی قوت نہ ہو کہ وہ سچ بولے۔اور جھوٹ بول کر ملک سے بھاگ جائے۔ ترس آتا ہے ان لوگوں پر جو اب بھی اس جھوٹ کو سنتے ہیں اور انکو لیڈر مانتے ہیں۔افسوسناک”

نواز شریف کی سوشل میڈیا پر لندن کے ہوٹل میں چائے پیتے ہوئے تصویر وائرل ہونے کے بعد جہاں وزیراعظم عمران خان کے ترجمان شہباز گل نے ان کو تنقید کا نشانہ بنایا وہی وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری بھی پیچھے نہ رہے اور اپنے آفیشل ٹوئٹر ہینڈل سے ملک میں نظام عدل اور انصاف پرسوال اٹھاتے ہوئے اپنے ٹویٹ میں لکھا کہ ” ‏ہمارے نظام انصاف، قانون، انتظامیہ اور عدالتی نظام کا منہ چڑاتی یہ تصویریں بتاتی ہیں کہ آخر عوام احتساب کے نظام پر کتنا اعتماد کر سکتے ہیں ؟”

واضح رہے کہ پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف عدالت سے طبی بنیادوں پر ضمانت حاصل کرنے کے بعد اس وقت لندن میں علاج کی غرض سے مقیم ہیں، جن کی اس سے قبل بھی ایک تصویر وائرل ہوئی تھی جس میں وہ کسی ہوٹل میں موجود کھانا کھارہے تھے اور اس موقع پر ان کے بھائی شہباز شریف، دونوں صاحبزادے حسن اور حسین نواز کے علاوہ سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈار بھی موجود تھے۔

    (166 posts)

    Look at the headline of Dawn on November 16, 2019."The Lahore High Court on Saturday allowed former premier Nawaz Sharif to travel abroad for four weeks for medical treatment.
    In a blow to the government, which had placed a condition of indemnity bonds for Nawaz’s travel, the court ordered the federal government to remove his name from the Exit Control List (ECL) without any conditions”.

    Senator (1k + posts)

    The theif apparently a lion ran way to london wonder why pml n dont realise lions do not away so nawaz a fake sher and true sher comes back to the jungle like imran returned to pakistan to build his country

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More