سہیل وڑائچ نے اپنے خواب میں وزیراعظم عمران خان کا ”متبادل“ تلاش کرلیا

سہیل وڑائچ نے اپنے خواب میں وزیراعظم عمران خان کا ”متبادل“ تلاش کرلیا

سہیل وڑائچ نے خواب میں کس کس شخصیت کو وزیراعظم بنتے دیکھا؟

سہیل وڑائچ آج کل حکومت کے خلاف تاریخیں دے رہے ہیں کہ فلاں تاریخ تک حکومت گھر چلی جائے گی لیکن سہیل وڑائچ کی کوئی بھی پیشن گوئی درست ہونے کا نام نہیں لے رہی، پیشنگوئیاں کرتے کرتے سہیل وڑائچ نے خواب دیکھ لیا اور خواب وزیراعظم عمران خان کی جگہ کسی اور کو وزیراعظم بنتا بھی دیکھ لیا۔

روزنامہ جنگ میں شائع ہونیوالے اپنے آج کے کالم "متبادل مل گیا” میں سہیل وڑائچ لکھتے ہیں کہ مائنس ون، مائنس ٹو اور مائنس تھری جیسی آوازوں نے بےکلی پیدا کر رکھی تھی، بستر پر لیٹے ہوئے پہلو بدل رہا تھا، پراگندہ خیالی نے گھیر رکھا تھا، اسی صورتحال میں پتا نہیں کب نیند آ گئی۔ صبح اُٹھا تو رات دیکھا جانے والا خواب پوری طرح یاد تھا۔ خواب میں دیکھتا کیا ہوں کہ روحانیت کے ہالے میں چند نورانی صورت بزرگ بیٹھے پاکستان کے نئے متبادل کے بارے میں گفتگو کر رہے ہیں۔

سہیل وڑائچ اپنا خواب لکھتے ہیں کہ خاکی لباس میں ملبوس بزرگ نے تجویز پیش کی کہ اُن کا بھتیجا (اسد عمر ) سب سے اچھا ہے۔ اس سفید ریش تجربہ کار نے کہا کہ کیا جرنیل، کیا جج اور کیا سیاستدان، سو افراد نے اُن کی کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر کے سو دنوں کی کارکردگی کو باقاعدہ اپنے دستخطوں کیساتھ سراہا ہے جس سے ثابت ہوتا ہے کہ وہ پوری ملّتِ پاکستان کے متفقہ امیدوار ہیں، خانِ اعظم کا بھی اُن پر مکمل اعتماد ہے۔

سہیل وڑائچ نے مزید لکھا اب محفل کی سب نظریں سبز پوش بزرگ پر تھیں وہ گویا ہوئے کہ بہاء الدین زکریا اور شاہ رکن عالم کی گدی کے وارث (شاہ محمودقریشی)کو اقتدار دینے کا وقت آ گیا ہے۔ وہ معاملہ فہم ہے، منجھا ہوا سیاست کا کھلاڑی ہے۔

آگے چل کر سہیل وڑائچ نے وزارت اعظمیٰ کے تیسرے امیدوار سے متعلق اپنا خواب لکھا کہ سرخ اجرک پہنے پیچھے بیٹھے بزرگ نے کہا، سندھی کو نہ بھول جانا وہ ذات کا سومرو (سابق چئیرمین سینٹ محمد میاں سومرو)ہے لیکن کھلا ڈلا ہے، دوستوں کا دوست اور پیپلز پارٹی کا ڈٹ کر مخالف ہے۔ اجرک والے بزرگ نے کہا کہ اسے پی ٹی آئی میں لاتے وقت یہ وعدہ کیا گیا تھا کہ یا تو اسے اسپیکر یا پھر صدر ِپاکستان بنایا جائے گا مگر جب حکومت بن گئی تو سب وعدے بھول گئے۔

سہیل وڑائچ اپنا خواب سناتے ہوئے مزید لکھتے ہیں کہ اہل سبز پوش نے تجویز دی کہ متبادل ایسا ہو جو نہ منتقم ہو اور نہ لڑاکا۔ تجربہ کار ہو ماضی میں انتظامیہ کو چلانے کا تجربہ رکھتا ہو۔ پنجاب سے نہ ہو کہ (ن) لیگ کو اس سے خطرہ ہو سندھ سے بھی نہ ہو کیونکہ اس پر پیپلز پارٹی کو لگے گا کہ سندھی وزیراعظم لا کر پیپلز پارٹی کو کارنر کیا جائے گا۔ متبادل کا تعلق نہ حکومت کی اتحادی پارٹی سے ہو اور نہ ہی اپوزیشن سے بلکہ پی ٹی آئی کے اندر سے ہو کیونکہ اس سے مینڈیٹ کا فوکس بدل جائے گا۔

سہیل وڑائچ کے مطابق سبز پوش نے تجویز دی کہ جو متبادل ہے وہ سیاست کے داؤ پیچ جانتا ہے۔ پیپلز پارٹی میں رہا ہے، اس لئے انہیں بھی پختونخوا سے متبادل لائے جانے پر اتفاق ہو گا۔ ن لیگ کا بھی براہِ راست اس سے کوئی تصادم نہیں۔ مجھے تو یہ متبادل بہتر لگتا ہے۔ خاکی پوش بابانےسرہلایااورکہاوہ دھیماہے،کام اچھاچلالےگا۔

سہیل وڑائچ کے کالم کے مطابق اسٹیبلشمنٹ پرویز خٹک کے نام پر متفق ہے

واضح رہے کہ جب سے عمران خان وزیراعظم بنے ہیں، سہیل وڑائچ آئے روز پیشنگوئیاں کرتے ہیں کہ فلاں ماہ تحریک انصاف کی حکومت جارہی ہے۔ سہیل وڑائچ سے متعلق سوشل میڈیا صارفین کی رائے ہے کہ وہ روزانہ عمران خان کو وزارت اعظمیٰ سے ہٹاکر سوتے ہیں لیکن صبح اٹھتے ہیں تو عمران خان ہی وزیراعظم ہوتا ہے۔

  • Doctors often describe schizophrenia as a type of psychosis. This means the person may not always be able to distinguish their own thoughts and ideas from reality.
    Symptoms of schizophrenia
    Symptoms of schizophrenia include:

    hallucinations – hearing or seeing things that do not exist outside of the mind
    delusions – unusual beliefs not based on reality
    muddled thoughts based on hallucinations or delusions

  • Fawad choudry ka interview …woh bhe independent urdu…or phr moom bati media ny usy itna promote kia..phr jb dekha keh kaam chal rha hae aik aur chuss marien…phr aik judge ka interview or moom baati media ke umeed the keh yeh interview tu aur bhe hal chal macha dy ga…per afsoos….
    Koshish krty raho choro daketo aur ghadaro….

  • itna burrah paindu, motu only good for his annoying ajj geo kae sath with his computer ROBOT monotonous voice, WHEN HE BECAME A JOURNALIST, ubh no news just action by IK govt, now he is getting dreams wt a fraud low life fker, same stinky thief attitude hidden agenda to make more money with bshit  jhoot on media appearances HE DOSENT CARE ABOUT US OR PAKISTAN, CANNOT OPEN HIS SARR AH MOUTH ON CORRUPTIONS OF HIS LIFAFA SUPPLIERS, NO SIR, CANT SEE NOTHING HONESTLY.PEMRA SHOULD SET CRITERIA FOR JOURNALISM ATLEAST A BACHELLOR DEGREE, OUR COUNTRY IS MESSED UP WITH THESE MEDIA GHUDDARS, THEY NEED TO BE GET RIDDEN ASAP, WE SUFFERED 20 YRS OF BS FREEDOM OF DRAMA PRESS JUST GAVE US TENSION, BUT STILL THESE PEOPLE ARE ON EVERY NIGHT

  • I think you are getting khwab from shaitan ask forgiveness from allah and ask your conscience was i taking benefit from the old regimes if yes than dont you get darona khawab about fake accounts money laundering and money launderer shaitans and shaitans inhabiting luxury apartments

  • There are few senior names in Politics and few in Journalism in Pakistan who have not done any good to Pakistan but completely curse to the country- Sohail Waraich is one of them — Hamid Mir, Ch Ghulam Hussain, few more – then Raza Rabbani, Javed Hashmi — these are biggest curse to Pakistan


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >