مجھے پریزنٹیشن اور بریفنگ دینا بند کریں،کارکردگی دکھائیں، وزیراعظم عمران خان برہم

وزیراعظم کا مزید وقت دینے سے انکار۔۔ بری کارکردگی پر اعلیٰ افسران کی کلاس

وزیراعظم ہاؤس کو کور کرنیوالے رپورٹر عبدالقادر کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے اپنے وزیروں، مشیروں اور اعلیٰ بیوروکریٹس کو کہہ دیا ہے کہ نومور۔۔ اب مزید وقت نہیں دیا جاسکتا۔ اب مجھے پریزنٹیشن اور بریفنگ دینا بند کریں، پرفارمنس کیا ہے وہ بتائیں۔ وزیراعظم عمران خان نے تین اعلیٰ افسران کی ٹھیک ٹھاک کلاس لی ہے کہ مجھے پرانی پریزنٹیشن دوبارہ کیوں دکھائی جارہی ہے۔ دیا گیا ٹاسک مکمل کرنے کی بجائے پرانی پریزنٹیشن بار بار وزیراعظم کو دکھائی جارہی ہے کہ اس معاملے میں یہ رکاوٹ ہے، اس معاملے میں یہ رکاوٹ ہے۔

عبدالقادر کے مطابق وزیراعظم نے کہا کہ یہ مسئلے آپ نے ہی حل کرنے ہیں، جو مسائل وزیراعظم آفس سے جڑے ہیں، وہ بتائیں، ہر بار آکر آپ ایک ہی چیز دکھاتے ہیں اور ایک ہی بات پر پھنس جاتے ہیں۔ وزیراعظم نے بیوروکریسی سے کہا کہ جو کرنیوالا کام ہے وہ کریں اور مجھے اپڈیٹ بتائیے۔ اس پر وزیراعظم نے کچھ وزراء کی بھی کلاس لی ہے اور کہا ہے کہ دلیرانہ فیصلے کریں۔میڈیا اور اپوزیشن کی تنقید میں خود برداشت کرلوں گا۔

اے آروائی رپورٹر کا کہنا تھا کہ آپ یہ سوچ رہے ہوں گے کہ ڈلیوری کیوں نہیں ہوپارہی۔ اسکی وجہ بیوروکریسی کے تاخیری حربے ہیں، ہر بار کوئی حیلہ بہانہ کہ فلاں جگہ فائل رک گئی ہے، فلاں جگہ پہ یہ اعتراض لگادیا گیا ہے۔ اس معاملے سے وزیراعظم اکتاچکے ہیں

عبدالقادر نے انکشاف کیا کہ جب پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں کم ہورہی تھیں تو وزیراعظم کو مشورہ دیا گیا تھا کہ پٹرولیم مصنوعات اتنی کم نہ کریں، لیکن وزیراعظم نے کہا کہ اس وقت کرونا کی صورتحال ہے، عوام کو ریلیف کی بہت ضرورت ہے۔ اگر بعد میں قیمتیں بڑھانا پڑیں تو بڑھا لیجئے ، پریشر میں خود برداشت کرلوں گا۔

اے آروائی رپورٹر کا کہنا تھا اب پٹرولیم مافیا یورو 5 کی مخالفت میں بھی سامنے آگیا ہے اور حکومت کو کہہ رہا ہے کہ اگر سسٹم یورو5 پر منتقل کیا گیا تو پٹرول کی فی لیٹر قیمت 5 سے 7 روپے بڑھانا پڑے گی۔ یہ مافیا پٹرول خرید کر گھٹیا کوالٹی کا پٹرول بیچ رہا ہے۔

صحافی کا یہ کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان اپنی ٹیم کی کارکردگی کے اعدادوشمار ایک ڈائری میں نوٹ کرتے ہیں، ، وزیراعظم نےدونوں ڈائریاں کھول لیں اور تاخیری حربوں پر کئی افسران کی سرزنش بھی کی اور کہا کہ ہر بار آپ مجھے بریفنگ دینے آجاتے ہیں، مجھے کارکردگی دکھائیں اور حقائق بتائیں کہ حکومتی اقدامات پر کتنا عملدرآمد ہوا ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >